ڈاکٹر ماہا شاہ کے والد کی درخواست، خودکشی یا کچھ اور؟؟؟ پوسٹ مارٹم سے متعلق آگیا نیا انکشاف

ڈاکٹر ماہا شاہ کے والد نے میڈیکل بورڈ کیلئے درخواست دائر کردی، جس میں کہا پوسٹ مارٹم کرنے والے ڈاکٹر نے رپورٹ غلط دی ہے، پوسٹ مارٹم،مزیدمیڈیکل معائنے کی اجازت دی جائے۔

ڈاکٹر ماہا شاہ کے والد نے ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج ساؤتھ میں میڈیکل بورڈ کیلئے درخواست دائر کردی، درخواست گزار کے وکیل عباس رشید رضوی ایڈووکیٹ نے کہا پولیس نے ڈاکٹر ماہا شاہ کے واقعے کو خودکشی قرار دیا، پولیس نے شواہد بھی خود کشی کے حساب سے جمع کیے، ہر سطح سےتحقیقات کیلئےنیا میڈیکل بورڈ تشکیل دیا جائے۔

وکیل درخواست گزار نے کہا کہ رپورٹ کےمطابق سرمیں بائیں جانب گولی لگی، دائیں جانب سے خارج ہوئی، پوسٹ مارٹم کرنے والے ڈاکٹر نے رپورٹ غلط دی ہے، قبرکشائی،پوسٹ مارٹم، مزید میڈیکل معائنے کی اجازت دی جائے۔

درخواست میں کہا گیا کہ ڈاکٹر ماہا شاہ کو زہر یا زیادہ ڈرگس دی گئی ہے، مقدمہ ڈاکٹر ماہا شاہ کے والد آصف علی شاہ کی مدعیت میں درج ہے اور مقدمے میں ملزم جنید ،وقاص، عرفان قریشی و دیگر نامزد ہیں۔

یاد رہے جوڈیشل مجسٹریٹ جنوبی نے ڈاکٹر ماہا شاہ مبینہ خود کشی کیس میں قبرکشائی، پوسٹ مار ٹم کی درخواست منظور کرتے ہوئے کہا تھا عدالت کو قبر کشائی پر کوئی اعتراض نہیں ہے ، استغاثہ کارروائی کرے عدالت تفتیش میں مداخلت نہیں کرسکتی۔

تحریری حکم میں کہا گیا تھا کہ ڈاکٹرماہا کی قبر کشائی، پوسٹ مارٹم قانون کے مطابق کی جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں