ٹیکنالوجی کی خبریں

ایندھن بنانے کا نیا نظام متعارف

سائنسدانوں نے سورج کی روشن اور ہوا سے ایندھن بنانے کا ایک نیا نظام بنایا ہے۔ یہ نظام لیبارٹری کے اور مخصوص حالات کے بجائے عام حالات میں کام کر سکتا ہے۔

رپوٹ کے مطابق اس نظام کا استعمال  ہوا بازی اور جہاز رانی جیسے شعبوں میں کیا جاسکتا ہے لیکن پہلے اس کی بڑے پیمانے پر پیدوار کیلئے اقدامات کرنے ہوں گے۔

اس نظام سے  پرواز اور جہاز رانی سے پیدا ہونے والی کاربن ڈائی آکسائیڈ کے اخراج کو کم کرنے میں مدد مل سکتی ہے۔ ہوا اور سورج کی روشنی سے پیدا ہونے والا یہ ایندھن مٹی کے تیل یا ڈیزل کی طرح کام کرے گا۔ لیکن اس کو مصنوعی طور پر پانی، کاربن ڈائی آکسائیڈ اور شمسی توانائی سے چلایا جائے گا۔

اس سسٹم کا انجینئرز نے ایک ورکنگ ورژن بنایا ہے جو تین ٹکڑوں پر مشتمل تھا۔ ایک ایئر کیپچر یونٹ جو ہوا سے کاربن ڈائی آکسائیڈ اور پانی لیتا ہے۔

 خیال رہے کہ  اس کے لیے بڑے پیداواری پلانٹس کی ضرورت ہوگی جو صحرائے صحارا کا تقریباً 0.5 فیصد ہو۔ اس ایندھن کی قیمت ابتدائی طور پر موجودہ مٹی کے تیل سے زیادہ ہوگی۔ 

 

 

 

Related Articles

Back to top button