ٹیکنالوجی کی خبریں

کھلونا نما پستول پر پابندی کا مطالبہ،لوگوں کا شدید ردِ عمل

 امریکہ میں کھلونا نما پستول کو بچوں کیلئے خطرناک قرار دیتے ہوئے اس پر پابندی کا مطالبہ کیا جارہا ہے، سماجی تنظیم نے مذکورہ کھلونا کمپنی کے اس عمل کو غیر ذمہ دار قرا دیا ہے۔

پستول بنانے والی ایک امریکی کمپنی کو اس وقت شدید ردعمل کا سامنا کرنا پڑا ہے جب کمپنی نے پلاسٹک کی لیگو برِکس سے کھلونا پستول بنائی۔
عرب نیوز کے مطابق امریکہ میں اسلحہ کے خلاف مہم چلانے والے کھلونا پستول بنانے کو خطرناک اور غیرذمہ دارانہ عمل قرار دے رہے ہیں۔
کمپنی “کلپر پریسیشن” جو گلاک 19 پستول تیار کرتی ہے نے اپنی مرضی کا پستول بنانے کے لیے پلاسٹک کی کھلونا برکس کا استعمال کیا ہے جو کسی بچے کی کھلونا بندوق کی طرح دکھائی دیتا ہے۔

بچوں کے کھلونے بنانے والی کمپنی لیگو برکس کھلونوں کے لیے پلاسٹک کی برکس (اینٹیں) بناتی ہیں۔ بلاک19 جو برکس اور گلو کے ساتھ ایک کٹ کی شکل میں آتا ہے، اس سے صارفین اپنی مرضی کا پستول بنا سکتے ہیں۔
کمپنی نے کہا ہے کہ وہ اس توجہ کے لیے مشکور ہے جو دنیا بھر میں بلاک 19 کو مل رہی ہے اور انہوں نے بلاک 19 کو شوٹنگ اسپورٹس اور مارکس مین شپ کی تربیت و پریکٹس سے حاصل ہونے والے لطف سے متعلق گفتگو کے لیے بنایا ہے۔

تاہم امریکہ میں اسلحہ کے خلاف متعدد مہم چلانے والوں نے بچوں کے کھلونے جیسا پستول بنانے کو غیرذمہ دارانہ اور خطرناک قرار دیا ہے۔
ایوری ٹاؤن فار گن سیفٹی کیمپین گروپ کے رکن شینن واٹس نے کہا ہے کہ ان کے ادارے نے گذشتہ ہفتے کسٹمائزڈ بلاک 19 کے بارے میں لیگو سے رابطہ کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ڈنمارک کی کمپنی نے کپلر پریسیشن کو ترک کرنے اور اجتناب برتنے کا خط بھیجا ہے جس میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ وہ اسلحے کی تیاری روک دے جو کھلونا نما لیگو برکس سے ڈھکا ہوا ہے۔
انہوں نے کہا کہ اس بات کا خطرہ ہے کہ بچے آتشیں اسلحہ استعمال کرنے کی جانب متوجہ ہو سکتے ہیں حتیٰ کہ جب اسلحہ کھلونوں جیسا نہ بھی دکھائی دیتا ہو۔ ردعمل سامنے آنے کے بعد ایسا لگتا ہے کہ اسلحہ بنانے والی کمپنی کی ویب سائٹ سے بلاک 19 ہٹا دیا گیا۔

Related Articles

Back to top button