پاکستانی خبریں

نواز شریف کے واپس نہ آنے پرعدالت کوازخود نوٹس لینا چاہیے تھا،فواد چودھری

وفاقی وزیر فواد چودھری کا کہنا ہے کہ نواز شریف کے واپس نہ آنے پر عدالت کو نوٹس لیتے ہوئے شہباز شریف کو طلب کرنا چاہیے تھا۔

وفاقی وزیر اطلاعات فواد چودھری نے نواز شریف کی وطن واپسی سے متعلق بی بی سی سے گفتگو میں کہا ہے کہ شہباز شریف نے ضمانت دی تھی کہ وہ چار ہفتوں کے بعد اپنے بھائی کو وطن واپس لیکر آئیں گے۔ایسا نہیں ہوا اس لیے حکومت ان کے خلاف لاہور ہائی کورٹ میں درخواست دائر کرے گی۔

ان کا کہنا ہے کہ عدالت عالیہ کو اس حوالے سے ازخود نوٹس لیتے ہوئے میاں شہباز شریف کو طلب کرنا چاہیے۔ابھی تک لاہور ہائی کورٹ کی طرف سے معاملے پر کوئی کارروائی نہیں ہوئی۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ وفاقی حکومت نے اس ضمن میں قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف کے خلاف عدالتی کارروائی کے لیے لاہور ہائی کورٹ میں درخواست دینے کا فیصلہ کیا ہے۔ بی بی سی کے مطابق شہباز شریف کے خلاف  درخواست کب تک دائر  کی جائے گی یہ نہیں بتایا گیا۔

واضح رہے کہ سابق وزیر اعظم نواز شریف کو علاج کی غرض سے لندن بھیجے جانے کے عدالتی فیصلے میں شہباز شریف کی جانب سے ایک بیان حلفی جمع کرایا گیا تھا جس میں انھوں نے اپنے بھائی کی پاکستان واپس آنے سے متعلق ضمانت دی تھی۔

 
 

Related Articles

Back to top button