پاکستانی خبریں

نئی قیمتوں کی اطلاق، ایف بی آر نے اعلان کر دیا

جائیداد کی قیمتوں میں اضافے کے فیصلے پر جاری تنازع کو ختم کرنے کے لیے فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) نے ایف بی آر نے اگلے سال 16 جنوری تک ٹیکسوں کے لیے نئی قیمتوں کو مؤخر کر دیا۔ رپورٹ کے مطابق ایف بی آر کے فیصلے کے بعد جائیداد کی قیمتوں میں غیر معمولی اضافہ اور ریئل…

خیال رہے کہ ایف بی آر نے یکم دسمبر کو ملک کے 40 بڑے شہروں میں ٹیکس لگانے کے مقصد سے پراپرٹی کی قیمتوں میں اضافہ کیا تھا تاکہ انہیں مارکیٹ ریٹ کے برابر لایا جا سکے جائیداد کے لین دین پر اصل انکم ٹیکس وصول کرنے کے لیے نرخوں پر نظر ثانی کی گئی تھی۔

اس ضمن میں جاری ایک بیان میں کہا گیا کہ ان لینڈ ریونیو کے تمام چیف کمشنرز (سی سی آئی آرز) قیمتوں پر نظرِ ثانی کی کمیٹیاں (وی آر سیز) تشکیل دیں گے اور انہیں 10 دسمبر تک نوٹیفائی کریں گے جببکہ کوئی بھی اسٹیک ہولڈر جسے قیمتوں پر تحفظات ہوں وہ 15 دسمبر تک وی آر سی میں درخواست دے سکتا ہے۔

سی سی آئی آرز اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ بامعنی مشاورتی عمل کریں گے اور قیمتوں کے تعین کے لیے اسٹیٹ بینک سے منظور شدہ قیمتوں کو شامل کریں گے۔

ایف بی آر نے پہلے ہی اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے اعلیٰ پراپرٹی ویلیوایشن ماہرین کو شامل کرنے کا اعلان کیا ہے جو اہم اسٹیک ہولڈرز اور ٹاؤن ڈویلپرز، ریئل اسٹیٹ ایجنٹس کے ساتھ بامعنی مشاورت کریں گے۔

اس مشاورتی عمل میں ایسے معاملات کا انفرادی طور پر جائزہ لیا جائے گا اور اگر کوئی بگاڑ ہے تو اسے دور کرنے اور جائیداد کی قیمت کو مارکیٹ کی قیمت کے قریب لانے کے لیے ضروری سفارشات پیش کی جائیں گی۔

جب تک یہ عمل مکمل نہیں ہو جاتا، جنوری 2022 کے وسط تک نئی قیمتوں کا اطلاق معطل رہے گا۔

Related Articles

Back to top button