پاکستانی خبریں

متحدہ اپوزیشن کا پارلیمانی قومی سلامتی کمیٹی کی ان کیمرہ بریفنگ کے بائیکاٹ کا فیصلہ

متحدہ اپوزیشن نے پارلیمانی قومی سلامتی کمیٹی کی ان کیمرہ بریفنگ کے بائیکاٹ کا فیصلہ کرلیا ہے۔پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں اہم بلز کو بلڈوز کرنے کے حکومتی رویے کی بناء پر بریفنگ کے بائیکاٹ کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

اپوزیشن کے اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ پارلیمنٹ میں موجود متحدہ اپوزیشن نے مشاورت کے بعد بائیکاٹ کا فیصلہ کیا۔ یہ امر انتہائی افسوسناک ہے کہ حکومت پارلیمان کو ربڑسٹیمپ کے طورپر استعمال کرنے کا وطیرہ اپنائے ہوئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: حکومت کا 2022 کو بطور نوجوانوں کا سال منانے کا اعلان

اپوزیشن نے آئین، قانون، قومی سلامتی، عوامی اہمیت کے حامل تمام امور پر ہمیشہ نہایت ذمہ دارانہ اور سنجیدہ قومی طرز عمل کا مظاہرہ کیا ہے۔ 6 دسمبر 2021 کو حکومت کی جانب سے پارلیمانی قومی سلامتی کمیٹی میں بریفنگ دینے سے متعلق آگاہ کیاگیا تھا۔

اپوزیشن کے قائدین اور پارلیمانی لیڈرز نے اپنی تجاویز بھی دیں تھیں۔ قومی سلامتی کے مشیر ڈاکٹر معید یوسف اجلاس میں بریفنگ دیں گے۔

Related Articles

Back to top button