پاکستانی خبریں

قادر مندوخیل کی فردوس عاشق اعوان کے خلاف مقدمے کے اندراج کیلئے عدالت سے رجوع

پیپلز پارٹی کے رکن قومی اسمبلی قادر خان مندوخیل نے ٹی وی شو کے دوران تھپڑ مارنے پر فردوس عاشق اعوان کے خلاف مقدمے کے اندراج کے لئے عدالت سے رجوع کرلیا۔

قادر خان مندوخیل ایڈوکیٹ نے کراچی کے ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج ویسٹ کی عدالت میں دائر درخواست میں موقف اختیار کیا ہے کہ ٹی وی چینل کے پروگرام میں وزیراعلیٰ پنجاب کی مشیر اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے مجھے تھپڑ مارا اور تشدد کیا۔

فردوس عاشق اعوان نے مجھے غلیظ گالیاں دیں اور جان سے مارنے کی دھمکیاں دیں۔ میں بمشکل وہاں سے اپنی جان بچا کر نکلا۔

درخواست میں مزید کہا گیا ہے کہ واقعے سے میرے ووٹرز اور اہلخانہ کو شدید صدمہ پہنچا ہے۔ پولیس نے واقعے کے مقدمے کے اندراج سے انکار کیا ہے۔ عدالت سے استدعا ہے کہ پولیس کو فردوس عاشق اعوان کے خلاف مقدمے کے اندراج کا حکم جاری کرے۔

9 جون کی رات نجی ٹی وی  کے پروگرام میں شرکت کے دوران فردوس عاشق اعوان اور قادر مندوخیل میں لفظی تکرار ذاتی حملوں کی شکل اختیار کرگئی تھی، اس دوران اینکر پرسن نے وقفہ لیا۔ وقفے کے دوران ہی دونوں میں ہاتھا پائی ہوئی، جس کی ویڈیو سوشل میڈیا پر لیک ہوگئی تھی۔

فردوس عاشق اعوان نے اپنے وضاحتی بیان میں کہا تھا کہ قادر خان مندوخیل نے مجھے ہراس کیا اور دھمکیاں دیں۔ مندوخیل کی اس بدکلامی اور بدزبانی کی وجہ سے مجھے اپنے دفاع میں انتہائی قدام اٹھانا پڑا کیونکہ میری سیاسی ساکھ اور عزت داؤ پر لگی۔

Related Articles

Back to top button