جعلی اکاؤنٹس کیس میں بڑی پیش رفت، ٹریکٹر اسیکنڈل میں ملوث ملزمان گرفتار

جعلی اکاؤنٹس کیس میں بڑی پیش رفت، ٹریکٹر اسیکنڈل میں ملوث ملزمان گرفتار

جعلی اکاؤنٹس کیس میں بڑی پیش رفت ہوئی ہے، نیب نے ٹریکٹر اسیکنڈل میں ملوث تین ملزمان کو گرفتار کرلیا ہے۔نیب کے مطابق تینوں ملزمان کو اسلام آباد سے گرفتار کیا گیا، ملزمان میں آفتاب احمد، غلام سرور اور تارا چند شامل ہیں، ملزمان کو آج ریمانڈ کے لئے احتساب عدالت پیش کیا جائے گا۔

نیب حکام کا کہنا ہے کہ ملزم آفتاب احمد محکمہ زراعت سندھ میں ایگزیکٹو انجینئرتھا جبکہ غلام سرور اور تاراچند ٹریکٹر ڈیلرز تھے ملزمان نے اومنی گروپ اور اورینٹ کمپنی کی ملی بھگت سےکسانوں کو دھوکا دیا، ان ملزمان نے سندھ کے عام افراد کے شناختی کارڈ استعمال کر کے سبسڈی حاصل کی اور ٹریکٹر دوسرے صوبوں کو مارکیٹ ریٹ پر فروخت کئے۔

حکام کے مطابق ملزمان نےجعلی دستاویزات اورجعلی اکاؤنٹس کے ذریعےکرپشن کی اور جعلی کسانوں کے نام پر ٹریکٹر جاری کرکے اوپن مارکیٹ میں بیچےگئے۔واضح رہے کہ ایف آئی اے اس سے قبل کراچی میں مختلف بینکوں کے 160 جعلی اور مشتبہ اکاؤنٹس کاسراغ لگا چکی ہے، مذکورہ اکاؤنٹس سے ابتدائی طور پر 22ارب سے زائد کی ٹرانزیکشن پکڑی گئیں ہیں۔

وزارت داخلہ کی اجازت سے کراچی میں 160اکاؤنٹس کی تحقیقات کے لیے انکوائری رجسٹر کرلی گئی، کارپوریٹ سرکل میں 10سے زائد افسران پر مشتمل مشترکہ تحقیقاتی کمیٹی بھی تشکیل دے دی گئی ہے۔

تحقیقات کے پہلے مرحلے میں بینکوں سے ریکارڈ حاصل کیا جاچکا ہے جن اکاؤنٹ کا سراغ لگایا گیا وہ جعلی ناموں پر کھلوائے گئے تھے، بھیجی اور وصول رقم مزید جن اکاونٹس میں منتقل ہوئیں ان کی جانچ شروع کی جاچکی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں