پاکستان کو ریڈ لسٹ میں شامل کرنے پر اسد عمر نے برطانوی حکومت کو آڑے ہاتھوں لے لیا

پاکستان کو ریڈ لسٹ میں شامل کرنے پر اسد عمر نے برطانوی حکومت کو آڑے ہاتھوں لے لیا

این سی او سی کے سربراہ اور وفاقی وزیر اسد عمر نے پاکستان کو ریڈ لسٹ میں شامل کرنے کے برطانوی فیصلے پر سوال اٹھادیا۔ٹوئٹر پر جاری بیان میں اسد عمر نے کہا کہ ہر ملک کو اپنے شہریوں کی صحت کی حفاظت کے لیے فیصلے کرنے کا حق ہے اور برطانیہ کی جانب سے پاکستان سمیت کچھ ممالک کو…

 

وفاقی وزیر نے سوال کیا کہ فیصلے سے سوال پیدا ہوتا ہےکہ کیا ان ممالک کا انتخاب سائنس کو مدنظر رکھ کر کیا گیا یا خارجہ پالیسی کو ؟
واضح رہےکہ عالمی وبا کورونا کے بڑھتے کیسز کے پیش نظر برطانیہ نے پاکستان کو سفری پابندیوں کی ریڈ لسٹ میں شامل کیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق سفری پابندیوں کی ریڈلسٹ میں شامل ممالک سے صرف برطانوی اور آئرش شہریوں کو ملک میں داخلے کی اجازت ہو گی، ریڈلسٹ میں شامل ممالک سے برطانیہ آنے والے برطانوی شہریوں کو 10 دن قرنطینہ کرنا ہو گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں