پی ڈی ایم کے لیے مدارس کے طلبہ کو ٹشو پیپر کی طرح استعمال کیا گیا،  حافظ حسین احمد

پی ڈی ایم کے لیے مدارس کے طلبہ کو ٹشو پیپر کی طرح استعمال کیا گیا، حافظ حسین احمد

جمیعت علما اسلام پاکستان کے رہنما حافظ حسین احمد نے کہا ہے کہ پی ڈی ایم کے لیے مدارس کے طلبہ کو ٹشو پیپر کی طرح استعمال کیا گیا۔

پشاور میں جمعیت علما اسلام پاکستان کے دفتر کے افتتاح کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے حافظ حسین احمد کا کہنا تھا کہ ’پی ڈی ایم میں مدرسے کے طلب علموں کو ٹشو پیپر کی طرح استعمال کیا گیا‘۔

اُن کا کہنا تھا کہ ’پی ڈی ایم کی وجہ سے سب سےزیادہ نقصان جےیوآئی کا ہوا، اب بھی وقت ہے کہ مولانا صدارت سے دستبردار ہوں‘۔ اُن کا کہنا تھا کہ اپوزیشن اتحاد میں ویسے تو تمام سیاسی جماعتیں شامل ہیں مگر سب نے اپنے مفادات پورے کیے۔

حافظ حسین احمد کا کہنا تھا کہ ’جمیعت علما اسلام کو موروثی بنانےکی کوشش کی جارہی ہے، مولانا فضل الرحمان فوری طور پر انٹرا پارٹی الیکشن کا انعقاد کرائیں اور جے یو آئی کے دستور کو بحال کریں‘۔

واضح رہے کہ جمعیت علما اسلام نے مولانا فضل الرحمان اور پی ڈی ایم کی مخالفت کے بعد مولانا شیرانی، حافظ حسین احمد، مولانا شجاع الملک سمیت دیگر سینئر رہنماؤں کو پارٹی سے نکالنے کا اعلان کیا۔

پارٹی سے نکالے جانے کے بعد ان رہنماؤں نے جے یو آئی کو پارٹی آئین کے مطابق دوبارہ بحال کرنے کا اعلان کرتے ہوئے ملک بھر میں کارکنان سے رابطے بھی شروع کیے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں