قائد حزب اختلاف حلیم عادل شیخ کو جیل سےرہائی کا پروانہ  مل گیا

قائد حزب اختلاف حلیم عادل شیخ کو جیل سےرہائی کا پروانہ مل گیا

سندھ اسمبلی میں قائد حزب اختلاف اور پاکستان تحریک کے رہنما حلیم عادل شیخ کو جیل سے رہاکر دیا گیا، حلیم عادل اسپتال میں زیر علاج تھے جہاں ان کی رہائی کا پروانہ پہنچایا گیا۔

حلیم عادل شیخ ڈیڑھ ماہ سے 2 مقدمات میں جیل میں تھے۔ حلیم عادل شیخ پر انسداد دہشت گردی کی دفعات کے تحت مقدمہ درج ہوا تھا۔

میڈیا سے گفتتگو کرتے ہوئے حلیم عادل شیخ نے کہا کہ رہائی کے بعد سب سے پہلے اپنے کارکنان سے ملنے جیل جاوَں گا۔ میرے 4 کارکنان جیل میں ہیں ان سے ملاقات کروں گا۔

حلیم عادل شیخ نے کہا کہ سندھ میں سیاسی مخالفیں پر دہشت گردی کے مقدمات بنا دئیے جاتے ہیں۔ سندھ حکومت نے میرا کئی سال کا سفر ڈیڑھ ماہ میں مکمل کرادیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ میں غریبوں کے حقوق کی بات کرتا ہوں۔ وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ اور صابق صدر آصف علی زرداری نے میرا جذبہ بڑھا دیا ہے۔ اپوزیشن لیڈر آفس میں سیل کھولنے جا رہے ہیں۔ پورے سندھ میں جہاں زیادتی ہوگی اسکے خلاف آواز اٹھائیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں