پی ڈی ایم میں دراڑ پڑنے کے بعد پاکستان مسلم لیگ کا دہرا معیار عیاں

پی ڈی ایم میں دراڑ پڑنے کے بعد پاکستان مسلم لیگ کا دہرا معیار عیاں

پی ڈی ایم میں دراڑ پڑنے کے بعد پاکستان مسلم لیگ کا دہرا معیار ایک بار پھر عیاں ہونے لگا ہے۔پاکستان پیپلز پارٹی کو پی ڈی ایم میں دراڑ ڈالنے کا ذمے دار قرار دینے والی پاکستان مسلم لیگ نون کا دہرا معیار سامنے آیا ہے، پی ڈی ایم کے اجلاسوں میں قومی اسمبلی سے مستعفی ہونے سے متعلق فیصلے…

یہ انتخابی مہم کراچی کے حلقے این اے 249 میں سابق وزیراعظم اور نون لیگ کے سینئر رہنما شاہد خاقان عباسی نے گذشتہ رات شروع کی، جہاں انہوں نے انتخابی مہم سے خطاب کرتے ہوئے ایک بار پھر ووٹ کو عزت دو کا نعرہ لگایا اور کہا کہ مہنگائی نے عوام کا جینا دو بھر کردیا ہے۔

شاہد خاقان عباسی نے الزام عائد کیا کہ وفاقی حکومت عوام کے لئے کچھ نہیں کررہی ہے، اگر آپ نے ترقی کرنی ہے تو ووٹ کو عزت دو کے نعرے پر عمل پیرا ہوتے ہوئے لیگی امیدوار مفتاح اسماعیل کو کامیاب کرانا ہوگا۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ ابھی تک پی ڈی ایم کو متحد رکھنے کے دعوی اس میں شامل تمام جماعتوں کی جانب سے کئے جارہے ہیں تاہم عملا یہ اتحاد ختم ہوچکا ہے، جس کی تازہ مثال این اے 249 کا ضمنی الیکشن ہے، جہاں ایک طرف نون لیگ نے اپنی انتخابی مہم شروع کردی ہے جبکہ پیپلز پارٹی بھی علی الاعلان کہہ چکی ہے کہ این اے 249 میں پیپلز پارٹی علیحدہ حیثیت میں الیکشن لڑے گی۔

روز اول سے پیپلز پارٹی کا موقف ہے کہ پارلیمنٹ ہی مقدم ہے اورتمام مسائل کو پارلیمنٹ میں رہ کر ہی حل کیا جاسکتا ہے، قومی اسمبلیوں سے استعفی دینا حکومت کو مضبوط کرنے کے مترادف ہوگا۔

دوسری جانب نون لیگ پی ڈی ایم کے پلیٹ فارم سے قومی اسمبلی سے مستعفی ہونے کے فیصلے کو درست قرار دیتی ہے، نون لیگ کا موقف ہے کہ حکومت پر دباؤ بڑھانے کا یہ بہترین طریقہ ہے۔

واضح رہے کہ این اے 249 کی نشست فیصل واوڈا کے سینیٹر بننے کے بعد خالی ہوئی ہے، اس حلقے میں پانچ اپریل کو ضمنی الیکشن کا میدان سجے گا، پاکستان تحریک انصاف نے اس حلقے سے امجد آفریدی کو اپنا حمتی امیدوار نامزد کردیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں