پی ڈی ایم کا  ہنگامی اجلاس آج بلالیا، اجلاس میں آئندہ کی حکمت عملی طے کی جائے گی

پی ڈی ایم کا ہنگامی اجلاس آج بلالیا، اجلاس میں آئندہ کی حکمت عملی طے کی جائے گی

حکومت مخالف اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ(پی ڈی ایم) کا آج ہنگامی اجلاس بلایا گیا ہے جس اسمبلیوں اسے استعفوں کے متعلق فیصلہ کیا جائے گا۔پی ڈی ایم کا سربراہی اجلاس مسلم لیگ ن کی میزبانی میں ہوگا۔ اجلاس میں آئندہ کی حکمت عملی طے کی جائے گی۔

مولانا فضل الرحمٰن اسمبلیوں سے استعفوں کے شدید حامی ہیں جبکہ پیپلز پارٹی فوری استعفوں کی مخالفت کررہی ہے۔

سربراہ پی ڈی ایم مولانا فضل الرحمٰن کا کہنا ہے کہ اگر ہم پارلیمنٹ سے استعفے نہیں دیتے تو شاید لانگ مارچ کی افادیت نہ ہو۔ آج پی ڈی ایم اجلاس میں لانگ مارچ کے حوالے سے حتمی حکمت عملی طے ہوگی۔

پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو نے کہا ہے کہ سیاسی فیصلہ کرکے ہی ہم حکومت کو سیاسی نقصان پہنچا سکتے ہیں، پی ڈی ایم کے اجلاس میں اپنی تجویز لے کر جائیں گے۔

بلاول بھٹو نے کہا ہے کہ استعفے ایٹم بم ہیں، لاسٹ کارڈ کے طور پر استعمال کریں گے۔
مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز کہتی ہیں کہ جو استعفوں پر نہیں مانتے، انہیں منانے کی کوشش کریں گے۔

اجلاس میں چیئرمین اور ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کے انتخابات میں پی ڈی ایم امیدواروں کی شکست پر غور ہوگا۔

لانگ مارچ سے متعلق بھی فیصلے کیے جائیں گے اور تحریک انصاف کی حکومت پر دباو بڑھانے کے طریقوں پر بھی غور ہو گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں