احتساب عدالت کے جج نے لیگی رہنما عظمیٰ بخاری کو کمرہ عدالت سے باہر بھیج دیا

احتساب عدالت کے جج نے لیگی رہنما عظمیٰ بخاری کو کمرہ عدالت سے باہر بھیج دیا

احتساب عدالت کے جج نے (ن) لیگ کی رہنما عظمیٰ بخاری کو کمرہ عدالت سے باہر بھیج دیا۔نیب عدالت میں داخلے سے روکنے پر عظمیٰ بخاری کی پولیس اہلکاروں سے تکرار ہوئی جب کہ اس موقع پر پولیس نے ایک لیگی کارکن پر تشدد بھی کیا جس سے اس کے منہ سے خون بہنے لگا۔

عظمیٰ بخاری نےکمرہ عدالت میں باہرکی صورتحال سے شہبازشریف کوآگاہ کیا جس پر فاضل جج نے عظمیٰ بخاری سے سوال کیا کہ میڈم آپ کون ہیں؟

عظمیٰ بخاری نے بتایا کہ میں وکیل ہوں اور میں کمرہ عدالت میں کھڑی ہوسکتی ہوں، اس پر جج نے کہا کہ میڈم آپ باہر تشریف لے جائیں، یہاں سیریس صورتحال ہے، یہاں وہی کھڑا ہوگا جو ملزمان کا وکیل ہے، آپ صورتحال کو سمجھیں کیونکہ کورونا وائرس دوبارہ پھیل رہا ہے۔

فاضل جج کے حکم پر (ن) لیگ کی رہنما عظمیٰ بخاری عدالت سے باہر چلی گئیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں