فیصل واوڈا کی دوہری شہریت پرالیکشن کمیشن میں 3شکایات درج

فیصل واوڈا کی دوہری شہریت پرالیکشن کمیشن میں 3شکایات درج

پاکستان تحریک انصاف کے رہنما اور سندھ سے رکن قومی اسمبلی فیصل واوڈا نے الیکشن کمیشن کے فیصلے کے خلاف سندھ ہائی کورٹ سے رجوع کرلیا ہے۔

انہوں نے استدعا کی ہے کہ الیکشن کمیشن کو میرے خلاف نااہلی کیس سے روکا جائے۔ وفاقی وزیر نے الیکشن کمیشن کے 24 فروری کے فیصلے کو چیلنج کیا ہے۔

پی ٹی آئی رہنما نے مؤقف اپنایا کہ الیکشن کمیشن نے حقائق کے برخلاف میری درخواست مسترد کی۔ الیکشن کمیشن کو میرے خلاف شکایات سننے کا اختیار نہیں۔ رہنما پی ٹی آئی فیصل واوڈا نےحکم امتناع کی بھی استدعا کی ہے۔

سندھ ہائی کورٹ نے فیصل واوڈا درخواست منظور کرلی ہے اور کل اس پر سماعت ہوگی۔ خیال رہے کہ فیصل واوڈا کی دوہری شہریت پرالیکشن کمیشن میں 3شکایات درج ہیں۔

درخواست کے متن میں درج ہے کہ 2018الیکشن کے نامزدگی فارم جمع کراتے ہوئے فیصل واوڈا امریکی شہریت رکھتے تھے اور پی ٹی آئی رہنما نے جھوٹا حلف نامہ جمع کرایا۔

فیصل واوڈا نے جھوٹا حلف دے کر بددیانتی کی، وفاقی وزیر کو دہری شہریت رکھنے اور جھوٹا حلف نامہ دینے پر نااہل کیا جائے اوربطور وزیر کام کرنے سے روکا جائے۔

عدالت سے استدعا کی گئی ہے کہ فیصل واوڈا کو نا اہل قرار دے کر کراچی کے حلقہ این اے 249 میں دوبارہ انتخابات کرائے جائیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں