متنازع مردم شماری کو قانونی قرار نہیں دیا جا سکتا، مصطفیٰ کمال

متنازع مردم شماری کو قانونی قرار نہیں دیا جا سکتا، مصطفیٰ کمال

چیئرمین پاک سرزمین پارٹی (پی ایس پی) مصطفیٰ کمال نے کہا ہے کہ کیا وزیر اعظم عمران خان کی حمایت پر ایم کیو ایم کو بچایا جا رہا ہے ؟

چیئرمین پی ایس پی مصطفیٰ کمال نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ متنازع مردم شماری کو قانونی قرار نہیں دیا جا سکتا۔ سب کہہ چکے ہیں کراچی کی آبادی 3 کروڑ سے زیادہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم کراچی کے مسائل کے حل نہ ہونے پر مایوسی کا شکار ہیں جبکہ نادرا کہہ چکا ہے کہ کراچی کے 2 کروڑ 40 لاکھ سے زائد شناختی کارڈ کا ڈیٹا موجود ہے۔

مصطفیٰ کمال نے کہا کہ ہماری آبادی تعداد کی نسبت سے کم شمار کی گئی ہے۔ وفاقی احمقوں کو اقتدار کی ذمہ داری دی گئی ہے اور وفاق اتحادیوں کو بچانے کی کوشش کر رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایم کیو ایم جیسی جماعت کو آج تک نیب کا نوٹس کیوں نہیں آیا ؟ کیا عمران خان کی حمایت پر ہی صرف ایم کیو ایم کو بچایا جا رہا ہے ؟

یہ بھی پڑھیں: خواجہ آصف کے بیرون ملک کاروباری شراکت داری کے شوائد نیب کو موصول

چیئرمین پی ایس پی نے کہا کہ پانی سر سے گزر گیا تو پھر نہیں کہنا مصطفیٰ کمال نے کیا کیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں