پنجاب حکومت کا یوٹرن، اساتذہ کی غیر تدریسی ڈیوٹیاں لگا دی

پنجاب حکومت نے اپنے ایک اور فیصلے سے یوٹرن لیتے ہوئےاساتذہ کی غیر تدریسی ڈیوٹیاں لگا دی ہیں۔اینٹوں کے بھٹوں اور خوشحالی سروے کے لئے سرکاری سکولوں کے اساتذہ کی خدمات لی جائیں گی۔ محکمہ اسکولز ایجوکیشن نے متعلقہ محکموں کے کام کرنے کے لئے اپنے اساتذہ پیش کردئیے ہیں۔

صوبہ بھر میں اساتذہ کو گھر گھر جاکر خوشحالی سروے کرنے کے احکامات جاری کر دئیے گئے۔ اینٹوں کے بھٹوں کو زگ زیگ ٹیکنالوجی پہ منتقلی کے لئے قرضوں کا ڈیٹا بھی اساتذہ مرتب کریں گے۔

ترجمان وزیر تعلیم مراد راس کے مطابق تمام ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹیز ڈسٹرکٹ کمشنرز کی ماتحت ہوتی ہیں۔ ڈی سی جب چاہے کسی بھی سرکاری ادارے کے ملازمین کو بلا سکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ضرورت پڑنے پر کسی اور محکمہ کے سٹاف کو طلب کیا جا سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایسی تمام ڈیوٹیز اسکول ٹائمز کے بعد منعقد کی جاتی ہیں۔

واضح رہے کہ پنجاب حکومت نے اساتذہ کی غیر تدریسی ڈیوٹیوں پر پابندی عائد کررکھی تھی اور اساتذہ کی غیر تدریسی ڈیوٹیاں نہ لگانے کا وعدہ بھی کیا تھا۔

گزشتہ سال ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹی نے غیر تدریسی ڈیوٹیوں پر پابندی لگائی تھی۔ اس حوالے سے تمام سکول سربراہان کو مراسلہ بھی جاری کیا گیا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں