نااہلی کیس، فیصل واوڈا کے مشکلات میں اضافہ

اسلام آباد ہائیکورٹ نے وفاقی وزیر برائے آبی وسائل فیصل واوڈا کی نااہلی سے متعلق کیس میں الیکشن کمیشن کے نمائندے کو ریکارڈ کے ساتھ پیش ہونے کا حکم دیا ہے۔فیصل واوڈا کی نااہلی سے متعلق کیس کی سماعت اسلام آباد ہائیکورٹ کے جسٹس عامر فاروق نے کی۔

آج بھی فیصل واوڈا کے وکیل کی جانب سے عدالت میں ریکارڈ جمع نہیں کرایا گیا جس پر جسٹس عامر فاروق نے وکیل صفائی سے استفسار کیا یہ بتائیں فیصل واؤڈا امریکی شہری تھے، انہوں نے شہریت کب ترک کی؟

جسٹس عامر فاروق نے فیصل واوڈا کے وکیل سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ آپ جواب داخل کرانے سے کیوں شرما رہے ہیں؟ آپ کے موکل کا کنڈکٹ درست نہیں، جھوٹا بیان حلفی جمع کرانے کے اپنے نتائج ہیں۔
انہوں نے مزید کہا کہتے ہیں کہ عدالتیں کام نہیں کرتیں، مورخ دیکھے تو لکھے کہ عدالتوں میں کیا ہوتا ہے۔

درخواست گزار کے وکیل بیرسٹرجہانگیر جدون نے کہا کہ کیس میں اب تک 16 سماعتیں ہو چکیں، ابھی تک جواب ہی داخل نہیں کرایا، اس کا ایک حل ہے کہ فیصل واوڈا کو ذاتی حیثیت میں طلب کر کے پوچھا جائے۔

عدالت نے آئندہ سماعت پر الیکشن کمیشن کے نمائندے کو ریکارڈ سمیت پیش ہونے کی ہدایت کرتے ہوئے سماعت 8 فروری تک ملتوی کر دی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں