سول ایوی ایشن اتھارٹی نے نیا سفری ہدایت نامہ جاری کر دیا

سول ایوی ایشن اتھارٹی نے نیا سفری ہدایت نامہ جاری کر دیا

پاکستان سول ایوی ایشن اتھارٹی نے نیا سفری ہدایت نامہ جاری کیا ہے اور پابندیوں میں بھی31 جنوری 2021 تک توسیع کر دی گئی ہے۔نوٹیفکیشن کے مطابق برطانیہ اور افریقہ سے پاکستان آنے والے مسافروں پر پابندی کا اطلاق ہو گا۔

برطانیہ اور ساؤتھ افریقہ میں مقیم قلیل مدتی ویزہ والے پاکستانیوں کو سفر کرنے کی اجازت ہو گی۔ دوہری شہریت کے حامل مسافروں نائیکوپ، پی او سی کارڈ ہولڈرز اور ورک ویزہ والے بھی پاکستان کا سفر کرسکیں گے۔

برطانیہ سے آنے والے مسافروں کو سفر سے72 گھنٹے قبل کووونا ٹیسٹ لازمی کروانا ہو گا۔ پاکستان پہنچنے پر مسافروں کا فوری کووونا ٹیسٹ کیا جائے گا۔

رپورٹ منفی آنے کی صورت میں مسافروں کو پانچ دن قرنطینہ میں گزارنا ہوں گیے۔ برطانیہ اور افریقہ کے سفارتکاروں اور انکی فیملیز کو پاکستان سفر کرنے کی خصوصی اجازت دی گئی۔

سفارتکاروں کو بھی سفر سے 72 گھنٹے قبل کروونا ٹیسٹ لازمی ہو گا۔ پاکستان پہنچنے پرسفارتکاروں اور انکی فیملیز کا دوبارہ ٹیسٹ کیے جائیں گیے۔

سفارتکاروں کو ہیلتھ ڈپارٹمنٹ کی جانب مقرر کردہ ہدایت کے مطابق قرنطینہ کرنا ہو گا۔

سی اے اے نے اس ضمن میں مختلف ممالک کو تین کیٹگریز میں تقسیم کیا ہے۔ کیٹگری اے میں شامل 24 ممالک سے آنے والے مسافروں کو ملک میں داخلے کے لیے کورونا ٹیسٹ سے استشنیٰ دیا گیا ہے۔

جن ممالک سے آنے والے مسافروں کو پاکستان کا سفر کرنے سے قبل کورونا کی منفی رپورٹ لازمی دینا ہو گی ان میں متحدہ عرب امارات اور برطانیہ بھی شامل ہیں۔

سعودی عرب، چین، آسٹریا، قازقستان، سنگاپور، آئرلینڈ، جنوبی کوریا، ناروے، نیوزی لینڈ اور مالدیپ سمیت دیگر 14 ممالک سے آنے والے مسافروں کو پاکستان داخلے سے قبل کورونا ٹیسٹ سے مستثنیٰ قراردیا گیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں