پبلک سروس کمیشن کا پیپر لیک کرنے کا الزام، اینٹی کرپشن نے 4 افراد کو گرفتار کر لیے

پبلک سروس کمیشن کا پیپر لیک کرنے کے الزام میں اینٹی کرپشن نے 4 افراد کو گرفتار کر لیا۔

اینٹی کرپشن لاہور نے پبلک سروس کمیشن کا پیپر لیک کرنے والے چار افراد کو گرفتار کر لیا ہے۔

پیپر لیک کرنے والا غضنفر نامی شخص ڈیپارٹمنٹ کا ملازم ہے، دوسرا ملزم وقار پبلک سروس کمیشن میں ڈیٹا آپریٹر تھا، اینٹی کرپشن حکام کا کہنا ہے کہ ملزمان پہلے بھی کافی پرچے لیک کر کے فروخت کر چکے ہیں۔

اینٹی کرپشن حکام نے بتایا کہ ہر پرچا لیک کرنے کے بعد ملزمان مکان تبدیل کر لیا کرتے تھے، چاروں ملزمان کی گرفتاری کے بعد محکمہ اینٹی کرپشن نے انھیں میڈیا کے سامنے بھی پیش کر دیا۔

ڈائریکٹر ویجلینس اینٹی کرپشن عبدالسلام عارف نے میڈیا سےگفتگو میں کہا کہ پنجاب پبلک سروس کمیشن بڑا حساس ادارہ ہے، یہاں سے آنے والے لوگ ملک کی بھاگ ڈور سنبھالتے ہیں، لیکن کچھ کالی بھیڑوں کی وجہ سے یہ ادارہ بدنام ہوا۔

انھوں نے بتایا کہ ملزمان کو گرفتار کرنے سے پہلے موک پریکٹس کی گئی اور پوری مکمل پلاننگ کی، ملزمان 15 لاکھ ایک پیپر کا مانگ رہے تھے، امیدواروں کے ساتھ 8 لاکھ میں ڈیل طے پائی تھی، وہ اپنے نمبر بدل کر ہمیں کال کرتے رہے، ملزمان نے کافی امیدواروں کو صبح چار بجے لاہور سے خود پک کیا، وہ پنجاب یونی ورسٹی کے ہاسٹل سے باہر نکلے اور آخر کار لاہور نہر سے ملزمان کو گرفتار کیا گیا۔

واضح رہے کہ آج لاہور اینٹی کرپشن نے قبضہ مافیا کے خلاف بھی ایک کارروائی کی اور محکمہ مال اور محکمہ آب پاشی کی کروڑوں روپے مالیت کی ہزاروں ایکڑ اراضی واگزار کرائی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں