پیپلز پارٹی میں فیصلے کا اختیار آصف علی زرداری کے پاس ہے، شاہ محمود قریشی

پیپلز پارٹی میں فیصلے کا اختیار آصف علی زرداری کے پاس ہے، شاہ محمود قریشی

وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کہا ہے کہ واضح ہو چکا پیپلز پارٹی پی ڈی ایم کے بیانیے سے پیچھے ہٹ چکی ہے۔ پیپلز پارٹی میں فیصلے کا اختیار آصف علی زرداری کے پاس ہے، پیپلز پارٹی میں فیصلے کا اختیار بلاول بھٹو کے پاس نہیں۔

انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی نے سینیٹ الیکشن لڑنے کا فیصلہ کیا اور ضمنی انتخابات میں بھی حصہ لےگی۔ اب استعفوں کی رٹ چھوڑ دیں اور قوم کے ساتھ مذاق نہ کریں،

ان کا کہنا تھا کہ 31جنوری تک وزیراعظم سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کیا جارہا ہے۔ آج کہہ رہا ہوں کہ وزیراعظم عمران خان ان کے کہنے پر کبھی استعفیٰ نہیں دیں گے۔

عمران خان منتخب وزیراعظم ہیں انہیں عوام کا مینڈیٹ اور اعتماد حاصل ہے۔ اصل حقیقت یہ ہے کہ پیپلز پارٹی کبھی سندھ حکومت کی قربانی نہیں دے گی۔

استعفے سے متعلق یہ لوگ سنجیدہ ہوتے تو ضمنی انتخابات میں حصہ لینے کی خواہش کا اظہار نہ کرتے۔ پی ڈی ایم میں مختلف الخیال لوگ این آر او اور مقدمات سے خلاصی کیلئے ایک جگہ جمع ہیں۔

وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے بھی کہا ہے کہ اپوزیشن کا شرانگیز بیانیہ بری طرح پٹ چکا ہے۔ اپوزیشن کے پاس کوئی پروگرام ہے نہ ایجنڈا۔ ان کے غیر فطری اتحاد کا شیرازہ بکھر رہا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ اپوزیشن عناصر کا دامن کرپشن سے آلودہ ہے۔ مایوسی کا شکار پی ڈی ایم کا ٹولہ عوام کو گمراہ نہیں کرسکتا۔اپوزیشن جماعتیں پاکستان کی ترقی روکنے کے درپے ہیں۔ اپوزیشن کا طرز عمل مکمل طورپر غیر جمہوری ہے۔

عثمان بزدار نے کہا خزانے پرہاتھ صاف کرنیوالے کس منہ سےعوام کی بات کرتے ہیں۔ سابق ادوارمیں کرپشن نہ ہوتی توآج ملک قرضوں میں نہ ڈوباہوتا۔

ملکی خزانہ لوٹنےوالوں کواپنےکیےکا حساب دیناہوگا، سابق حکمرانوں نےاپنےدورمیں عوام کیلئےکچھ نہیں کیا،
بدعنوان عناصرکو لوٹ مارکی دولت بچانے کی فکرہے۔ کرپشن کرنیوالوں کوترقی کےسفرمیں رکاوٹ نہیں ڈالنےدیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں