بھارت میں 11 پاکستانی ہندوؤں کے قتل پر عالمی عدالت انصاف جائیں گے: رمیش کمار

رکن قومی اسمبلی رمیش کمار نے کہا ہے کہ بھارت میں 11 ہندووں کے قتل کے معاملے پر پاکستان ہندو کونسل لواحقین کو انصاف دلانے کے لیے عالمی عدالت انصاف جائے گی۔

ڈاکٹر رمیش کمار نے بھارت میں پُراسرار طور پر ہلاک ہونے والے ہندو خاندان کی پاکستان میں موجود واحد رشتہ دار خاتون کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے انکشاف کیا کہ بھارتی ایجنسی را پاکستان سے بھارت جانے والے ہندووں کو جاسوسی کے لئے استعمال کرتی ہے اگر کوئی انکار کرے تو ان 11 لوگوں کی طرح انہیں وہاں بلا کر قتل کردیا جاتا ہے۔

تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی اور چیئرمین پاکستان ہندو کونسل ڈاکٹر رمیش نے اعلان کیا کہ لواحقین کو انصاف دلانے کے لیے پاکستان ہندو کونسل جلد سپریم کورٹ میں بھی پٹیشن دائر کرے گی اور عالمی عدالت انصاف کا دروازہ بھی کھٹکھٹائے گی۔

اس موقع پر بھارت میں قتل ہونے والے 11 ہندوؤں کی واحد رشتہ دار خاتون شری متی مکھی نے کہا کہ اگر انصاف نہ ملا تو وہ خود سوزی کرلیں گی۔ خاتون نے مزید کہا کہ انہیں بتایا جائے 11 کو تو قتل کردیا گیا باقی جو 5 وہاں ابھی موجود ہیں وہ کس حال میں ہیں کہیں ان کو بھی قتل نہ کردیا جائے۔

پریس کانفرنس کے دوران ہندو برادری نے مطالبہ کیا کہ ایف آئی آر کی کاپی، پوسٹ مارٹم رپورٹ اور پاکستان ہائی کمیشن دہلی کو ساری معلومات تک رسائی دی جائے۔ بھارت کا ظلم آشکار کرنے کے لئے امریکا و یورپ میں بھی آواز اٹھائیں گے۔

واضح رہے کہ پاکستان سے بھارت جانے والے ہندو خاندان کے 11 افراد پُراسرار طور پر ہلاک ہوگئے تھے جب کہ صرف ایک شخص زندہ بچا تھا جو اُس رات گھر پر موجود نہیں تھا۔

بھارتی پولیس اب تک اس پراسرار قتل کی گتھی نہیں سلجھا سکی ہے۔

 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں