وزیر اعظم عمران خان نے مریم نواز کے حوالے سے کیا فیصلہ کر لیا؟ (ن) لیگ کے لیے بڑی خبر آگئی

وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید احمد کا کہنا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان نے مریم نواز کو باہر نہ جانے دینے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

شیخ رشید کا کہنا تھا کہ مریم نواز گزشتہ 10 روز سے رابطے میں تھیں اور کہہ رہی تھیں کہ انہیں باہر جانے دیا جائے لیکن بات نہیں بن سکی۔ وزیر اعظم نے واضح کردیا ہے کہ مریم نواز باہر نہیں جاسکتیں۔

انہوں نے کہا کہ مریم نواز کی نیب میں پیشی کا معاملہ یکطرفہ ہوسکتا تھا لیکن میڈیا نے پتھروں کے تھیلے دکھا کر انہیں زیرو کردیا۔

مریم نواز نے زمین کے معاملے پر جواب نہیں دینا تھا، اس لیے وہ نیب پر پتھراؤ کرنے ہی گئی تھیں، وہ پتھراؤ کے ذریعے سیاسی فائدہ اٹھانا چاہتی تھیں۔

شیخ رشید کا کہنا تھا کہ ’مولانافضل الرحمان کہتے ہیں کہ حکومت کو ہٹاؤ تو سب کو فائدہ ہے مگر دونوں پارٹیاں بڑا قدم اٹھانے اور مولانا کے ساتھ چلنے کے لیے تیار نہیں ہیں‘۔

شیخ رشید نے عثؐمان بزدار کی رخصتی کے حوالے سے کہا کہ وہ کہیں نہیں جارہے۔ عمران خان ان کے ساتھ کھڑے ہیں، ق لیگ بھی انہیں تنگ نہیں کرے گی، چوہدری برادران عمران خان کو نہیں چھوڑیں گے۔

دوسری جانب وزیر اعظم کے مشیر برائے پارلیمانی امور بابر اعوان نے کہا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان سے ٹرپل پلس این آر او مانگا جا رہا ہے۔

مشیر پارلیمانی امور بابر اعوان نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان کی وجہ سے دنیا میں پاکستان کے پاسپورٹ کی عزت بحال ہوئی۔ کچھ لوگ پوچھتے ہیں کہاں ہے تبدیلی؟ انہیں بتانا چاہتا ہوں یہاں ہے تبدیلی۔

انہوں نے کہا کہ آل پارٹیز کانفرنس (اے پی سی) پہلے کامیاب ہوئی نہ اب ہو گی اور حزب اختلاف کا ایجنڈا چور دروازے سے کرسی حاصل کرنا ہے، دنیا کا سب سے بڑا کھلاڑی ہمارا وزیر اعظم ہے اور بھارت کی آنکھوں میں آنکھیں ڈالنے والا عمران خان ہے۔

بابر اعوان نے کہا کہ ایک وزیر اعظم وہ تھا جو مودی کو گھر لایا اور اماں کےلئے ساڑیاں تحفے میں دیں۔ نواز شریف دور میں مودی کی ایئر پورٹ پر امیگریشن ہوئی نہ اسے ویزا لینے کی ضرورت پیش آئی۔

انہوں نے کہا کہ ملک میں جمہوریت مستحکم ہے اور ہم 5 سال پورے کریں گے۔ ہر بات پر ریاست کو طعنے دینے والے کس کی خدمت کرتے ہیں؟

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں