پروٹوکول ڈبل سے ٹرپل اور کارکردگی صفر, وزیراعظم عمران خان نے وفاقی کابینہ میں رد و بدل کا فیصلہ کر لیا

وزیراعظم نے وفاقی کابینہ میں مزید رد و بدل کا فیصلہ کر لیا، ذرائع کے مطابق کئی وزراء کیلئے خطرے کی گھنٹی بجا دی گئی، عید کے بعد تمام وزراء کی کارکردگی کا جائزہ لے کر اہم فیصلے کیے جائیں گے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے عید الاضحیٰ کے فوری بعد اپنی کابینہ میں مزید رد و بدل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس حوالے سے ذرائع کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ وزیراعظم عمران خان عید الاضحٰی کے فوری بعد اپنی کابینہ کے تمام اراکین کی کارکردگی کا جائزہ لیں گے۔

وزیراعظم کی جانب سے ایک ایک وفاقی وزیر کی کارکردگی کا تفصیلی جائزہ لیا جائے گا۔ کارکردگی جائزہ لیے جانے کے بعد وزارتوں میں رد و بدل کے حوالے سے اہم فیصلے کیے جائیں گے۔

مزید بتایا گیا ہے کہ بدھ کے روز 2 معاونین خصوصی کے استعفوں کے بعد کئی وفاقی وزراء کیلئے بھی خطرے کی گھنٹی بجائی گئی ہے۔ وزیراعظم نے کچھ روز قبل ہی وفاقی وزراء کو تلقین کی تھی کہ اپنی وزارتوں کی کارکردگی میں بہتری لائے گی۔

وزیراعظم نے واضح کیا تھا کہ جو وزیر کام نہیں کرے گا، کارکردگی نہیں دکھائے گا تو اسے گھر بھیج دیا جائے گا۔

ذرائع کی جانب سے مزید بتایا گیا ہے کہ وزیراعظم ظفر مرزا کی جگہ نئے معاون خصوصی برائے صحت یا وزیر صحت کی تقرری کے حوالے سے بھی عید کے بعد ہی فیصلہ کریں گے۔

اس تمام صوتحال کے حوالے سے اپوزیشن جماعتوں کی جانب سے بھی مختلف دعوے کیے جا رہے ہیں۔

اپوزیشن کے رہنماوں کا دعویٰ ہے کہ تانیہ ایدروس اور ظفر مرزا نے خود استعفیٰ نہیں دیا بلکہ ان سے استعفیٰ لیا گیا ہے۔

ان دونوں کے مزید کچھ معاونین خصوصی سے استعفے لیے جانے کا امکان ہے۔ اس حوالے سے ندیم افضل چن کا نام بھی سامنے آ رہا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں