شریف برادران نےحکومت سے کیا خفیہ معاہدہ کر رکھا ہے؟ اعتزاز احسن نے بتا دیا

پیپلز پارٹی کے رہنما اعتزاز احسن نے کہا ہے کہ شریف برادران نےحکومت کو استحکام اور مدت پوری کرنےکی ضمانت دے رکھی ہے۔

نجی ٹی وی  سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ اپوزیشن لیڈر اور حکومت ملےہوں تو نیب قوانین میں تبدیلی کا بل پاس بھی ہو سکتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ نیب قوانین میں ترمیم سے ظاہر ہوتا ہے کہ منظورنظر چیئرمین نیب کو توسیع دی جائے گی، اپوزیشن کو اصولی طور پر توسیع کے معاملے کو نہیں ماننا چاہیے۔

خیال رہے کہ حکومت نے قومی احتساب بیورو (نیب) قوانین میں ترمیمی بل کا مسودہ تیار کر لیا ہے جس کے مطابق نیب آرڈیننس کے سیکشن 6 سے ناقابل توسیع کا لفظ نکالاجائیگا۔

نئی ترمیم کےمطابق چیئرمین نیب کی مدت ملازمت میں توسیع کی جاسکے گی۔ ڈپٹی چیئرمین نیب اور پراسیکیوٹرجنرل نیب کی مدت ملازمت میں بھی توسیع کی جاسکےگی۔

مسودہ کے مطابق سیکشن7 اور 8 میں مدت ملازمت میں ناقابل توسیع کا لفظ نکال دیاجائے گا۔ ترامیم کے تحت وفاقی اور صوبائی ٹیکس اور لیوی کے معاملات نیب کے اختیارمیں نہیں رہیں گے۔

مسودے کے مطابق ٹیکس سے متعلق انکوائریز کے اختیارات متعلقہ حکام اور وزارتوں کے حوالے کیے جائینگے۔ ٹیکس اورلیوی کے معاملات نیب عدالتوں سے فوجداری عدالتوں کومنتقل کردیے جائینگے۔

مسودے کے مطابق ٹیکس اورلیوی کےمعاملات کے لین دین کا عوامی عہدہ رکھنے والوں سے تعلق نہیں ہوگا۔ مالی فائدہ لینے کے سوا حکومتی منصوبے یا اسکیم میں ضابطے کے نقائص عوامی عہدہ رکھنے والے پرلاگو نہیں ہونگے۔

مسودے کے مطابق رپورٹ دینے پرعوامی عہدہ رکھنے والے کیخلاف کارروائی نہیں ہوگی، جب تک مالی فائدے کے ثبوت نہ ہوں۔

ذرائع کے مطابق مسودے کی کاپی اپوزیشن جماعتوں کو دے دی گئی ہے۔ مجوزہ مسودہ پارلیمانی کمیٹی برائے قانون سازی کے سامنے پیرکو پیش کیا جائے گا۔

خیال رہے کہ وزیرخارجہ شاہ محمودقریشی پارلیمانی کمیٹی برائےقانون سازی کےسربراہ ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں