سعودی حکومت کا حج سے متعلق اہم بیان آگیا، عوام ہوجائے متوجہ

رواں برس حج سے متعلق فیصلہ 15 جون تک متوقع ہے تاہم مختلف تجاویز پر غور جاری ہے۔

رواں برس حج سے متعلق سعودی حکومت کا مختلف تجاویز پر غور جاری ہے۔ سعودی عرب حتمی پالیسی کی اجراء سے قبل پاکستان سمیت بڑے مسلم ممالک سے مشاورت کرے گا۔

ذرائع وزارت مذہبی امور کے مطابق رواں برس حج سے متعلق فیصلہ 15 جون تک متوقع ہے جبکہ رواں برس حج کے لیے تمام بڑے ممالک کا 80 فیصد کوٹہ ختم کرنے کی تجویز زیر غور ہے۔

ذرائع کے مطابق تمام ممالک سے صرف وفود کو حج کی دعوت دینے کی تجویز بھی زیر غور ہے اور حج کی سعادت صرف سعودی عرب میں رہنے والوں کو دینے کی تجویز پر بھی غور جاری ہے۔

اس سے قبل سعودی عرب کے وزیر برائے حج و عمرہ ڈاکٹر محمد صالح کہہ چکے ہیں کہ کورونا وائرس کے سبب غیر یقینی کی صورتحال ہے لہذا عازمین حج فی الحال حج کی منصوبہ بندی سے گریز کریں۔

ان کا کہنا تھا کہ حجاج کرام اور عمرہ زائرین کی ہر حال میں خدمت کے لیے سعودی عرب پوری طرح تیار ہے، لیکن ابھی حالیہ دنوں میں ہم ایک عالمی وباء کا سامنا کر رہے ہیں۔

اس سے قبل وزیر مذہبی امور نور الحق قادری نے کہا تھا کہ 15 رمضان المبارک تک حج ہونے یا نہ ہونے کا فیصلہ ہو جائے گا تاہم تاحال حج سے متعلق کوئی فیصلہ نہ ہوسکا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں