پی آئی اے نے مشرق وسطیٰ کی پروازوں میں ایک اہم پابندی عائد کردی، اہم تفصیلات جانئے

پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائن (پی آئی اے) نے مشرق وسطیٰ کی پروازوں میں کھانا فراہم کرنے کی سروس بند کر دی ہے۔

پی آئی اے حکام کا اس ضمن میں کہنا ہے کہ دبئی، ابوظہبی، سعودی عرب، مسقط اور عمان کی پروازوں میں مسافروں کو کھانا فراہم نہیں کیا جائے گا۔

حکام نے کہا کہ یہ پابندی کورونا وائرس سے بچاؤ کے اقدامات کے تحت عائد کی گئی ہے۔

پی آئی اے کی مشرق وسطیٰ کی پروازوں میں کھانا فراہم کرنے کی بندش کے احکامات فلائٹ سروسز کی جانب سے جاری کیے گئے۔

قومی ایئر لائن کے حکام کا کہنا ہے کہ دوران پرواز مسافروں کو پانی ، سافٹ ڈرنک اور جوس فراہم کیا جائے گا۔

قبل ازیں پاکستان پیپلزپارٹی کے مرکزی رہنما اور ڈپٹی چیئرمین سینیٹ سلیم مانڈوی والا نے کہا تھا کہ ملک کی قومی ایئرلائن پی آئی اے کے بجائے نجی ایئرلائن کو فلائٹ آپریشن کی اجازت دینا انتہائی مضحکہ خیز ہے۔

انہوں نے ہدایت کی کہ پی آئی اے کو فلائٹ آپریشن کی اجات دی جائے۔

ڈپٹی چیئرمین سینیٹ نے کہا کہ قومی ایئر لائن کو صرف بیرون ملک موجود مسافروں کو پاکستان لانے کے لیے استعمال کیا جا رہا ہے جب کہ نجی ایئر لائن کو معمول کے مطابق فلائٹ آپریشن کی اجازت دی گئی ہے۔

سلیم مانڈوی والا نے مطالبہ کیا کہ پاکستان کی قمی ایئر لائن پی آئی اے کو دنیا میں تمام کھلے ہوئے ائیرپورٹس تک فلائٹ آپریشن کی اجازت دی جائے۔

 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں