عوام گھروں میں رہے، ورنہ شہروں کو لاک ڈاﺅن کرنا پڑ جائے گا، ڈاکٹر یاسمین راشد

کرونا وائرس کے پیش نظر وزیر صحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشد کا کہنا ہے کہ پنجاب میں کرونا کے 78 کنفرم کیسز ہیں جن میں سے 60 ایران سے آنے والے زائرین ہیں، کرونا کے 80 فیصد لوگ پینا ڈول سے ہی ٹھیک ہوجاتے ہیں، عوام گھروں میں رہیں یہ نہ ہو کہ کل کو لاک ڈاﺅن کرنا پڑے۔

کرونا وائرس کے حوالے سے میڈیا بریفنگ دیتے ہوئے وزیر صحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشد نے بتایا کہ پنجاب میں 384افراد کے ٹیسٹ کیے گئے،پنجاب میں کرونا وائرس کے 78 کنفرم کیسز ہیں جن میں سے 60 ایران سے آنے والے زائرین ہیں ، لاہور کے میو ہسپتال میں زیر علاج 4 مریض صحت یاب ہورہے ہیں، جو ٹھیک ہورہے ہیں ان کو بھی 14دن آئسولیشن میں رکھا جائے گا۔

ڈاکٹر یاسمین راشد کا کہنا تھا کہ پنجاب حکومت کے پاس آئسولیشن کے لیے 500سے زائد کمرے ہیں، پنجاب میں ٹیچنگ ہسپتالوں میں الگ سے آئسولیشن رومز قائم کیے ہیں،عملے کے پاس تمام تر ضروری چیزیں موجود ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ ڈی جی خان میں موجود زائرین کے ٹیسٹ 48 گھنٹوں میں مکمل کرلیے جائیں گے،کرونا سے متاثرہ 80فیصد لوگ پینا ڈول سے ہی ٹھیک ہوجاتے ہیں، کرونا وائرس سے نمٹنے کے لیے تمام اقدامات کررہے ہیں۔

ڈاکٹر یاسمین راشد کا کہنا تھا ہماری پوری کوشش ہے کہ حالات کو کنٹرول کیا جائے، وائر س سے متاثرہ افراد کو الگ رکھا گیا ہے،عوام گھروں میں رہیں، یہ نہ ہو کل کو لاک ڈاﺅن کرنا پڑے،رات 10بجے کے بعد تمام شاپنگ مالز بند ہوجائیں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں