وزیراعلیٰ خیبرپختونخواہ نے ریسٹورنٹس، بیوٹی پارلرز بند کرنے کا اعلان کر دیا

وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے صوبے میں کرفیو لگانے کی افواہوں کو مسترد کر دیا، کہا کہ تمام اشیائے ضروریہ کی دکانیں 24 گھنٹے کھلی رہیں گی۔

پشاور میں میڈیا سے گفتگو میں انہوں نے بتایا کہ کورونا سے متعلق ٹاسک فورس کے اجلاس میں بڑے فیصلے کیے گئے۔

انہوں نے بتایا کہ کورونا وائرس سے متعلق ایک ہیلپ لائن قائم کی ہے جبکہ کچھ دنوں میں مزید ٹیلی فون لائن قائم کر رہے ہیں

اس کے علاوہ انہوں نے بتایا کہ عوام کی سہولت کے لیے اشیائے ضروریہ کی دکانیں 24 گھنٹیں کھلی رہیں گی جبکہ باقی بازار اور مارکیٹیں شام 7 بجے تک کھلی رہیں گی۔

 بات کو جاری رکھتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ شادی ہالز پر پابندی کے علاوہ اب ہم نے گھروں اور نجی مقامات پر تقاریب پر بھی پابندی عائد کردی ہے

وزیراعلیٰ کا کہنا تھا کہ جمعہ کے روز سرکاری دفاتر میں 12 بجے چھٹی ہوگی جبکہ عام دنوں میں معمول کے اوقات کار صبح 10 سے سہ پہر 4 بجے تک کھلے رہیں گے۔

انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ غیرضروری بازار میں نہ جائیں، ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ ہم نے بچوں کو تعطیلات اس لیے نہیں دیں کہ وہ سیاحتی مقام جاکر چھٹیاں منائیں، لہٰذا ہم نے سیاحتی مقامات پر جانے پر بھی پابندی لگادی۔

محمود خان کا کہنا تھا کہ ہم نے فیصلہ کیا ہے کہ سرکاری اجلاسوں میں صرف 5 لوگ شریک ہوں گے تاہم اگر کسی اور کی ضرورت ہے ہوئی تو وہ ویڈیو لنک کے ذریعے شرکت کرسکتے ہیں۔

ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ وزیر صحت کے سوا وزیر مملکت اور تمام وزرا کے دفاتر کو عارضی طور پر بند کر رہا ہوں تاکہ وہاں لوگوں کا رش نہ ہو۔

 

 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں