18

سابق وزیراعظم نواز شریف کے بیٹے حسین نواز نے والد کی طبیعت سے متعلق بڑا بیان دے دیا

سابق وزیراعظم نواز شریف کے بیٹے حسین نواز نے ایک بار پھر والد کی طبیعت سے متعلق تشویش ظاہر کردی۔

مسلم لیگ (ن) کے قائد نواز شریف 15 روز سے لندن میں علاج کے لیے مقیم ہیں جہاں ان کا معائنہ اور مختلف ٹیسٹ کیے جارہے ہیں۔

سابق وزیراعظم کا گزشتہ روز بھی گائز اسپتال میں دل کےسرجن اور گردوں کے امراض کے ماہر ڈاکٹرز نے معائنہ کیا تھا۔ میڈیا سے گفتگو میں نواز شریف کے بیٹے حسین نواز نے والد کی طبیعت سے متعلق بتایا کہ ان کی طبیعت میں بہتری کی کوئی آثار نظر نہیں آئے، نواز شریف کی طبیعت جیسی کل تھی ویسی ہی آج بھی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان نے جو گفتگو کی، وہی اصل حقائق ہیں، ان کی صحت سے متعلق سوال کے جواب ڈاکٹر عدنان ہی دے سکتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ نواز شریف کی قوتِ مدافعت میں خرابی کی وجوہات سے متعلق علم نہیں، نزلہ بخار کی وجہ کا پتہ نہیں چلتا تو اس کا اتنی جلدی کیسے پتہ چل سکتا ہے؟

خیال رہے کہ 28 نومبر کو نواز شریف کا لندن کے برج اسپتال میں پوزیٹرون ایمیشن ٹوموگرافی (پی ای ٹی) اسکین ہوا تھا جس میں کئی گھنٹے لگے تھے۔ گزشتہ روز اس ٹیسٹ کے حوالے سے نواز شریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان نے بتایا تھا کہ نواز شریف کے دائیں بغل (رائٹ ایگزیلا) میں ایک سے زائد گلٹیاں ہیں جو بڑی ہو چکی ہیں، مرض کی مزید تشخیص جاری ہے۔ یاد رہے کہ گزشتہ دنوں سابق وزیراعظم کی صحت سے متعلق ان کے بیٹے حسین نواز کا کہنا تھا کہ خواہش ہے نوازشریف کا علاج ایک چھت تلے ہو لیکن ان کی طبیعت میں بہتری کے آثار نظر نہیں آ رہے، والد کو متعدد بار مشورہ دیاکہ امریکا سے علاج کروائیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں