9/11 کے بعد اسلام اور مسلمانوں کو نقصان ہوا: وزیراعظم 

وزیراعظم پاکستان عمران خان نے کہا کہ 9/11 کے بعد سب سے زیادہ نقصان اسلام اور مسلمانوں کا ہوا ہے۔

امریکہ میں نفرت انگیز بیا نیے کیخلاف منعقدہ ایک تقریب میں بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ خودکش حملوں کو مسلمانوں سے جوڑا جاتا ہے جو حقیقت کے برعکس ہے۔

عمران خان کا کہنا تھا 9/11 سے پہلے 97 فیصد خود کش حملے تامل ٹائیگرز کرتے تھے لیکن کسی نے ہندو مذہب پر الزام نہیں لگایا۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ متشدد اسلام کوئی مذہب نہیں ہے، مسلمانوں کا مذہب صرف محمدﷺ کا اسلام ہے جو امن کا درس دیتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ یورپ کے لوگ زیادہ مذہبی نہیں ہیں اس لیے ان کو اسلام کے بارے میں زیادہ علم نہیں، ہم اپنی زندگی مذہب کے مطابق گزارتے ہیں اس لیے ہمارے اندر مذہبی جذبات پائے جاتے ہیں۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ جس طرح ہولوکاسٹ سے یہودیوں کو تکلیف ہوتی ہے اسی طرح محمدﷺ کی توہین مسلمانوں کے لیے تکلیف دہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کا کوئی مذہب نہیں ہے اسے اسلام سے جوڑنا مسلمانوں کیساتھ نا انصافی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ معاشرے کی نا انصافیاں لوگوں کو نفرت انگیز بیانیے کی طرف لے جاتی ہیں اور اسے ختم جانا ضروری ہے۔

وزیراعظم کا کہنا تھا ایک ہی معاشرے میں رہتے ہوئے ہمیں دوسروں کا خیال رکھنا چاہیے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں