بین الاقوامی

کم عقل مودی کو برطانوی وزیراعظم نے دی زرہ سی عقل، نتائج کا انتظار

برطانوی وزیراعظم بورس جانسن ںے کہا ہے کہ کشمیر کا مسئلہ پاکستان اور بھارت کو باہمی طور پر حل کرنا ہوگا۔

تفصیلات کے مطابق مقبوضہ کشمیر کی بگڑتی صورت حال پر عالمی رہنماؤں کو تشویش ہے، برطانوی وزیراعظم نے بھارتی ہم منصب نریندرمودی کو فون کیا اور کشمیر پر پاکستان سے مذاکرات پر زُور دیا۔

برطانوی وزیراعظم بورس جانسن نے نریندرمودی سے کہا کہ برطانیہ سمجھتا ہے کشمیر کا مسئلہ پاکستان اور بھارت کو باہمی طور پر حل کرنا ہے۔

دونوں رہنماؤں کے درمیان ہونے والی گفتگو میں آرٹیکل 370 کی منسوخی پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا، جبکہ برطانوی وزیراعظم نے مودی پر زور دیا کہ وہ مذاکرات کی میز پر آئیں۔

مزید پڑھئے: ٹرمپ کی مسلہ کشمیر پر ایک بار پھر ثالثی کی پیشکش

ادھر امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے مقبوضہ کشمیر پر ایک بار پھر ثالثی کی پیشکش کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان کشمیر دیرینہ، پیچیدہ اور حل طلب مسئلہ ہے۔

دوسری طرف امریکی صدر کی جانب سے پاکستان اور بھارت کے درمیان مسئلہ کشمیر کیلئے ثالثی کی ایک بارپھر پیشکش پر ٹوئٹر پیغام میں فواد چودھری نے کہا کہ ڈونلڈ ٹرمپ کی دوبارہ ثالثی کی پیشکش دنیا کی کشمیر پر تشویش عیاں کرتی ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر کی صورتحال فیصلہ کن موڑ پر ہے، آرٹیکل 370کا خاتمہ کرکے نریندر مودی اپنے ہی جال میں پھنس چکے ہیں، مقبوضہ کشمیر کی کشیدہ صورتحال پر دنیا کو تشویش لاحق ہے، دنیا نے مودی کے فسطائی ہتھکنڈے اور آرایس ایس کے نازی فلسفہ کو مسترد کردیا ہے۔

Related Articles

Back to top button