بین الاقوامی

متحدہ عرب امارات کا فرانس سے 80 جنگی جہازخریدنے کا اعلان

متحدہ عرب امارات (یو اے ای) نے رافیل جنگی جہازوں کے لیے فرانس کے ساتھ 14 ارب یورو کے معاہدے پر دستخط کردیے جبکہ فرانسیسی صدر ایمانوئل میکرون کے خلیجی دورے پر اربوں یورو کے ایک اور معاہدے کا عزم بھی کیا گیا ہے۔

فرانسیسی جنگی جہازوں کے لیے یہ تاریخ کا سب سے بڑا بین الاقوامی معاہدہ ہے جو ایمانوئل میکرون اور ابوظبی کے ولی عہد شیخ محمد بن زاید النہیان کے درمیان 2 روزہ دورے میں بات چیت کے بعد سامنے آیا ہے۔

ایمانوئل میکرون دو روزہ دورے کے دوران قطر اور سعودی عرب بھی جائیں گے۔

وسائل سے مالامال متحدہ عرب امارات، فرانسیسی دفاعی مصنوعات کا سب سے بڑا خریدار ہے جس نے فرانسیسی فوج کے 12 کراکل ٹرانسپورٹ ہیلی کاپٹر کے معاہدے پر بھی دستخط کیے، جس کی کُل مالیت 17 ارب یورو ہے۔
ایمانوئل میکرون نے دبئی میں میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ ’خطے کے ساتھ تعلقات اور دہشت گردی کے خلاف فعال تعاون پر ہمارا مؤقف واضح ہے جس سے ہمیں متحدہ عرب امارات کے ساتھ بہترین تعلقات قائم کرنے کا موقع ملا ہے‘۔

طویل المدت شراکت داری کے حوالے سے ایک سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ ’میرے خیال سے اس سے فرانس کے مؤقف کو تقویت ملتی ہے‘۔

انہوں بات جاری رکھتے ہوئے فرانس کے اس تعلق کو ’پختہ‘ اور ’بااعتماد‘ قرار دیا اور کہا کہ ’یہ وہ اتحادی ہیں جو اپنے وعدوں پر قائم ہیں‘۔

ابوظبی کے مبادلہ خودمختار دولت فنڈ نے فرانسیسی کاروبار میں 8 ارب یورو کی سرمایہ کاری کا عزم بھی کیا، جبکہ یو اے ای کے دارالحکومت کی لورے آرٹ گیلری کی برانچ کے لائسنس میں 10 سال کی توسیع کرتے ہوئے اسے2047 تک بڑھا دیا گیا۔

پارلیمانی رپورٹ کے مطابق 2011 سے 2020 تک یو اے ای، فرانس کی دفاعی صنعت کا پانچواں بڑا خریدار تھا، جب انہوں نے 47 ارب کے معاہدے کیے تھے۔

سعودی عرب کی جانب سے مذکورہ معاہدے کے تحت لیے جانے ہتھیار یمن میں استعمال کیے گئے تھے جس کے بعد فرانس کو شدید تنقید کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

Related Articles

Back to top button