کورونا سے متعلق غیر سنجیدہ رویہ، تنزانیہ کے صدر انتقال کرگئے

کورونا سے متعلق غیر سنجیدہ رویہ، تنزانیہ کے صدر انتقال کرگئے

کووڈ 19 سے متعلق غیر سنجیدہ رویہ اختیار کرنے والے تنزانیہ کے صدر جوہن میگوفولی 5 سال سے زیادہ تفرقہ انگیز حکمرانی کے بعد 61 سال کی عمر میں حرکت قلب بند ہونے سے انتقال کرگئے۔

رائٹرز کی رپورٹ کے مطابق تنزانیہ کی نائب صدر نے ان کی موت سے متعلق آگاہ کیا۔

‘بلڈوزر’ کی عرفیت سے مشہور جوہن میگوفولی تقریباً 3 ہفتوں سے عوامی منظرنامے سے غائب تھے اور یہ افواہیں زیرگردش تھیں کہ ان کی طبیعت خراب ہے جبکہ اپوزیشن رہنماؤں کا دعویٰ تھا کہ وہ وائرس سے متاثر ہوئے ہیں۔

نائب صدر سامعہ سلوہو حسن نے کہا کہ میں انتہائی دکھ کے ساتھ آگاہ کر رہی ہوں کہ آج ہم نے ہمارے بہادر لیڈر جمہوریہ تنزانیہ کے صدر جوہن پومبے میگوفولی کو کھو دیا۔

انہوں نے کہا کہ صدر دارالحکومت دارالسلام کے ایک ہسپتال میں ‘دل کے عارضے’ کے باعث انتقال کرگئے، ساتھ ہی انہوں نے بتایا کہ وہ ایک دہائی سے ایک غیرمعمولی حرکت قلب کرونک اٹریل فائبریلیشن کا شکار تھے۔

جوہن میگوفولی کے انتقال کے بعد نائب صدر ملک کی صدر کا عہدہ سنبھالیں گی اور وہ افریقہ میں پہلی خاتون ہوں گی جو ریاست کی سربراہ بنیں گی۔

تنزانیہ کی نائب صدر نے مزید بتایا کہ انہیں 6 مارچ کو جاکایا کک ویٹ کارڈیک انسٹی ٹیوٹ میں کچھ وقت کے لیے داخل کرایا گیا تھا تاہم بعد ازاں انہیں ڈسچارج کردیا گیا تھا۔

جس کے بعد ایک مرتبہ پھر جوہن میگوفولی کی طبیعت ناساز ہوئی تھی اور انہیں 14 مارچ کو دوبارہ ہسپتال لے جایا گیا تھا۔

سامعہ حسن نے صدر کے انتقال پر 14 روزہ سوگ کا اعلان بھی کیا۔

صدر جوہن میگوفولی آخری مرتبہ 27 فروری کو عوام کے سامنے آئے تھے اور اس کے بعد وہ 3 اتوار تک خدمات سے دور رہے تھے جس نے تحفظات کو جنم دیا تھا۔

واضح رہے جوہن میگوفولی کو 2015 میں کرپشن کو ختم کرنے والے شخص کے طور پر منتخب کیا گیا تھا۔

تاہم ایک آمرانہ وقت بھی آیا جب میڈیا، سول سوسائٹی، اپوزیشن پر کریک ڈاؤن دیکھنے کو ملا جس پر غیرملکی اتحادیوں اور حقوق کے گروہوں میں خطرے کی گھنٹی بجا دی۔

گزشتہ اکتوبر میں ان کے دوبارہ اتنخاب کو مبینہ دھاندلی، غیر ملکی میڈیا اور مبصرین کی ٹیموں کو روکنے اور بڑی تعداد میں فوجی کی موجودگی پر دھوکا قرار دیتے ہوئے مسترد کردیا گیا۔

تاہم انہوں نے مفت تعلیم کا فروغ، دیہات میں بجلی اور ریلوے، دوہری بجلی کے لیے ہائیڈرو پاور ڈیم اور قومی ایئرلائن کی بحالی جیسے انفرا اسٹرکچر کے منصوبوں میں سرمایہ کاری کرکے دل بھی جیتے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں