بحرین میں خود کار اور ڈرائیور لیس پبلک میٹرو سسٹم کی تعمیر کا آغاز

بحرین میں خود کار اور ڈرائیور لیس پبلک میٹرو سسٹم کی تعمیر کا آغاز

بحرین ایک مکمل خود کار، اسٹیٹ آف دی آرٹ اور ڈرائیور لیس پبلک میٹرو سسٹم کی تعمیر کا خواہاں ہے اور اس پراجیکٹ کے لیے نجی شراکت چاہتا ہے۔

مقامی میڈیا رپورٹ کے مطابق بحرین کی وزارت ٹرانسپورٹ اینڈ ٹیلی کمیونیکیشنز (ایم ٹی ٹی) نے ایک نئے پروکیورمنٹ پروسیس کا آغاز کیا ہے جس سے شہریوں کے لیے میٹرو نیٹ ورک بنانے کے منصوبوں کے لیے نجی شعبے کو راغب کیا جائے گا۔

ایم ٹی ٹی ایک مکمل خود کار، اسٹیٹ آف دی آرٹ اور ڈرائیور لیس پبلک میٹرو سسٹم کی تعمیر کے لیے عوامی نجی شراکت کے حصے کے طور پر علاقائی اور عالمی کمپنیوں کی شراکت حاصل کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔

بحرینی حکام اس پروجیکٹ کو متعارف کروانے اور ممکنہ شراکت داروں کی دلچسپی کا اندازہ کرنے کے لیے مارچ کے پہلے ہفتے میں عالمی مارکیٹ ورچوئل ساؤنڈنگ فورم کی میزبانی کریں گے۔

کنسلٹنسی فرم کے پی ایم جی اس منصوبے کے لیے مالی، تکنیکی اور قانونی مشیر ہوگی۔

یہ منصوبہ 109 کلومیٹر ریل پر مبنی اربن ٹرانزٹ کے 4 لائنوں کے نیٹ ورک پر مشتمل ہے جو کہ مرحلہ وار بنائے جائیں گے۔

پہلا مرحلہ 2 لائنوں پر مشتمل ہوگا جس کی تخمینہ لمبائی 28.6 کلومیٹر ہو گی اور اس میں 20 اسٹیشنز شامل ہوں گے جن میں 2 انٹر چینج ہوں گے، یہ دونوں لائنیں مرکزی مقامات جیسے بحرین کے بین الاقوامی ہوائی اڈے بڑے رہائشی، تجارتی اور اسکول کے مقامات کو مربوط کریں گی۔

بحرین کے وزیر برائے ٹرانسپورٹ اینڈ ٹیلی کمیونیکیشنز انجنئیر کمال بن احمد محمد نے کہا کہ وزارت جدت کی حوصلہ افزائی، افادیت پیدا کرنے اور اس منصوبے کے لیے پیسہ کی بہترین قیمت فراہم کرنے کے لیے نجی شعبے کے ساتھ عوامی نجی شراکت داری کی بنیاد پر تعاون کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ یہ نقطہ نظر حکومت کی سہولت کار اور ریگولیٹر کی حیثیت سے کام کرنے کے ساتھ معیشت میں نجی شعبے کی فعال شرکت کو قابل بنائے جانے کی ہماری قیادت کے عزم کا عکاس ہے۔

بحرین کا میٹرو پروجیکٹ ملک کے 32 بلین ڈالر کے بڑے اسکیل انفراسٹرکچر منصوبوں میں تازہ ترین منصوبہ ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں