ٹرمپ کی ٹیکس ریکارڈ خفیہ رکھنے کی درخواست مسترد، امریکی سپریم کورٹ نے فیصلہ سنا دیا

ٹرمپ کی ٹیکس ریکارڈ خفیہ رکھنے کی درخواست مسترد، امریکی سپریم کورٹ نے فیصلہ سنا دیا

امریکی سپریم کورٹ نے سابق امریکی صدر ٹرمپ کی ٹیکس ریکارڈ خفیہ رکھنے کی درخواست مسترد کردی ، درخواست مسترد ہونے کے بعد استغاثہ سابق صدر کا ٹیکس ریکارڈ حاصل کرسکے گا۔

سابق امریکی صدر ٹرمپ کو الیکشن ہارنے کے بعد ایک اور جھٹکا لگا ، امریکی سپریم کورٹ نے ٹیکس ریکارڈ خفیہ رکھنے کی درخواست مسترد کردی۔

امریکی عدالت کے اس فیصلہ کے بعد استغاثہ ٹیکس ریکارڈ حاصل کرسکےگا اور سابق صدر کیخلاف مبینہ ٹیکس فراڈ کی تحقیقات کی جاسکیں گی، ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنے دور حکومت میںڈیموکریٹس کے مطالبے کے باوجود ریکارڈ خفیہ رکھا تھا۔

سابق صدر نے عدالت کے فیصلے کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے ڈیموکریٹس کے خلاف مہم جاری رکھنے کا اعلان کیا ہے۔

یاد رہے گذشتہ سال صدارتی انتخابات سے قبل امریکی میڈیا نے دعویٰ کیا تھا کہ ڈونلڈ ٹرمپ نے گزشتہ 10 سالوں کے دوران بلکل بھی ٹیکس ادا نہیں کیا یا پھر نا ہونے کے برابر ٹیکس کی ادائیگی کی۔

امریکی اخبار نیویارک ٹائمز نے کہا تھا کہ دنیا کے امیر ترین افراد کی فہرست میں شامل ڈونلڈ ٹرمپ نے 2016 میں صدر منتخب ہونے کے بعد صرف 750 ڈالر ٹیکس ادا کیا تھا۔

میڈیا رپورٹس میں کہا گیا تھا کہ صدر ٹرمپ نے صدارتی روایات کو پامال کرتے ہوئے اپنی ٹیکس تفصیلات بھی عام کرنے سے انکار کردیا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں