آذربائیجان کی فوج نے ترک پرچم کاراباخ میں لہرا دیا

آذری فوجیوں نے تنازعے والے علاقے کاراباخ میں ترک پرچم لہرا دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق آذربائیجان اور آرمینیا کے درمیان طے پانے والے معاہدے کے بعد ان علاقوں کا کنٹرول آذربائیجان نے حاصل کر لیا ہے جہاں سے آرمینیا کا انخلا عمل میں آیا۔

آذری فوجیوں نے کارا باخ میں ترک پرچم بھی لہرا دیا ہے، یہ آذربائیجان کا وہ علاقہ ہے جہاں دونوں ممالک کے درمیان جنگ چھڑی ہوئی تھی۔

پرچم لہرانے والے فوجیوں کا کہنا تھا کہ کاراباخ کی واگزاری میں ہمارے ساتھ برادر ملک ترکی نے قریبی تعاون کیا، اس لیے ترکی اور آذربائیجان کے پرچموں کو ساتھ ساتھ لہرایا جا رہا ہے۔

سماجی رابطوں کی ویب سائٹس پر متعدد تصاویر اپ لوڈ کی گئی ہیں جن میں آذری فوجیوں کی جانب سے ترک پرچم لہرائے جا رہے ہیں، ترک فوجیوں کا کہنا تھا کہ کارا باخ آذربائیجان کی ملکیت ہے۔

واضح رہے کہ ترکی کے پارلیمان نے آج ترک فوجی آذربائیجان میں تعیناتی کے لیے بھیجنے کی منظوری بھی دے دی ہے۔ پارلیمانی اسپیکر مصطفیٰ شان توپ نے اپنی ٹویٹ میں کہا کہ آئین کی دفعہ 92 کے تحت جمہوریہ آذربائیجان میں ترک فوجیوں کی تعیناتی سے متعلق صدارتی حکم نامے کو پارلیمان کی اکثریت نے قبول کر لیا ہے۔

یاد رہے کہ 10 نومبر کو آذربائیجان کے ساتھ جنگ میں آرمینیا نے پسپائی اختیار کرتے ہوئے روس کی ثالثی میں مکمل جنگ بندی کے معاہدے پر دستخط کیے تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں