کورونا کی علامات ظاہر ہونے پرپوری کابینہ کو زبردستی قرنطینہ میں ڈال دیا گیا

وزیر صحت کو کورونا وائرس کی تشخیص ہونے کے بعد آئرلینڈ کی پوری کابینہ کو زبردستی قرنطینہ میں ڈال دیا گیا۔

آئرلینڈ کے وزیر برائے صحت اسٹیفن ڈونیلے کو کورونا کی علامات ظاہر ہوئیں جس کے بعد انہوں نے اپنا ٹیسٹ کروایا تھا۔

وزیرصحت اپنی ٹیسٹ رپورٹ کا انتظار کررہے تھے جو انہیں منگل کے روز موصول ہوئی۔ رپورٹ میں اسٹیفن کے وائرس سے متاثر ہونے کی تصدیق ہوئی ہے۔

وزیر کو تصدیق ہونے کے بعد حکومت نے کابینہ کے تمام اراکین کو زبردستی آئسولیشن میں جانے کا حکم دیا جبکہ اسپیکر نے اسمبلی کا اجلاس آئندہ ہفتے یعنی 14 دن کے لیے ملتوی کردیا۔

ڈونیلے نے اپنے ساتھی پارلیمینٹیرینز کو آج دوپہر بتایا تھا کہ اُن کی طبیعت ناساز ہے اور جسم بری طرح سے دکھ رہا ہے۔

اسپکر اسمبلی نے اجلاس کے دوران پارلیمنٹ اراکین کو مخاطب کر کے کہا کہ ’میرے پاس بہت سنجیدہ معلومات ہیں، جو آج کے واقعے کے حوالے سے ہیں، میں کابینہ اراکین کو کہتا ہوں کہ وہ از خود قرنطینہ میں چلے جائیں‘۔

انہوں نے بتایا کہ وزیراعظم خود بھی قرنطینہ میں چلے گئے ہیں، اراکین بھی آئسولیشن میں جائیں اور آئندہ نوٹس تک گھروں سے باہر نہ نکلیں۔

وزیرصحت کو کرونا کی تشخیص ہونے کے بعد حکومت نے ایک بار پھر لاک ڈاؤن میں سختی کرنے کا عندیہ دے دیا ہے جس کے تحت ڈبلن میں آئندہ ہفتے تک لوگوں کو گھر سے بلا ضرورت باہر نکلنے کی اجازت نہیں ہوگی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں