مجھے اپنے شوہر کا اتنا زیادہ پیار ہضم نہیں ہو رہا، خاتون طلاق لینے عدالت پہنچ گئی، جانیے تفصیلات

کچھ خواتین ہوتی ہیں کہ پانچ بچوں کی ماں بننے کے بعد بھی شکوہ کناں ہوتی ہیں کہ ’بس سہیلی، سچا پیار نہیں ملا۔‘ لیکن اس بھارتی خاتون کو دیکھیں، جس نے شوہر کے پیار سے تنگ آ کر اس سے طلاق کا مطالبہ کر دیا ہے۔

اس خاتون کا تعلق بھارتی ریاست اتر پردیش کے ضلع سامبھل سے ہے۔ اس مسلمان خاتون نے شرعی عدالت میں دائر کیے گئے مقدمے میں موقف اختیار کیا ہے کہ”میری شادی کو 18ماہ گزر چکے ہیں اور میرا شوہر مجھ سے اس قدر پیار کرتا ہے کہ ان 18مہینوں میں اس نے ایک بار بھی مجھ سے لڑائی نہیں کی۔ میں اس کے اتنے زیادہ پیار سے تنگ آ گئی ہوں چنانچہ مجھے طلاق دلوائی جائے۔ “

خاتون کا کہنا ہے کہ ”مجھے اپنے شوہر کا اتنا زیادہ پیار ہضم نہیں ہو رہا۔ وہ گھر کے تمام کاموں، حتیٰ کہ کھانا پکانے میں بھی میری مدد کرتا ہے۔ آج تک اس نے مجھے کسی بات پر مایوس نہیں کیا۔

لڑائی تو دور کی بات، آج تک اس نے مجھ سے اونچی آواز میں بات تک نہیں کی۔ اس طرح کے ماحول میں میرا دم گھنٹے لگا ہے۔ میں جب بھی کوئی غلطی کرتی ہوں، وہ فوراً مجھے معاف کر دیتا ہے۔ میں چاہتی ہوں کہ وہ مجھ سے لڑائی کرے لیکن وہ ایسا نہیں کرتا۔ میں ایسی زندگی نہیں جی سکتی جس میں میرا شوہر میری ہر بات پر سرتسلیم خم کرے۔“

یہ مقدمہ سننے والے عالم خاتون کے اس موقف پر ہکا بکا رہ گئے اور اس کی طلاق کی درخواست مسترد کر دی۔ عالم نے خاتون کا موقف سننے کے بعد کہا کہ ’تمہارے پاس طلاق کی کوئی اور وجہ ہے؟‘

اس پر خاتون نے کہا کہ نہیں۔خاتون کے اس جواب پر عالم نے اس کی درخواست مسترد کرتے ہوئے اسے اپنے شوہر کے ساتھ رہنے کا حکم دے دیا۔

خاتون یہ معاملہ مقامی پنچایت میں بھی لے کر گئی لیکن پنچایت نے بھی اس کا موقف سننے کے بعد اس کی درخواست مسترد کر دی۔

اس خاتون کے شوہر کا کہنا ہے کہ ”میں نے کبھی کوئی غلط نہیں کیا۔ میں ایک پرفیکٹ شوہر بننا چاہتا ہوں۔ میں نہیں جانتا کہ میری بیوی ایسا کیوں کر رہی ہے۔“

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں