سنیپ چیٹ کی مدد سے سعودی پولیس کی کارروائی میں اہم پیشرفت سامنے آگئی

محکمہ ٹریفک پولیس نے انتہائی تیز رفتاری سے گاڑی چلانے والے سعودی کو گرفتار کرلیا جس کی ویڈیو سنیپ چیٹ پر وائرل ہونے کے بعد اس کی شناخت ممکن ہوئی تھی۔

سعودی ذرائع ابلاغ کے مطابق محکمہ ٹریفک نے توجہ دلائی کہ جان لیوا رفتار سے ڈرائیونگ اور اسے سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کر کے خودستائشی میں مبتلا ہونا سنگین جرم ہے۔

محکمہ ٹریفک کی جانب سے کہا گیا ہے کہ نوجوان کو گرفتار کرکے اس کے خلاف چالان مکمل کرنے کے بعد اسے ٹریفک کورٹ کے حوالے کردیا گیا۔

محکمہ ٹریفک کا کہناہے کہ مقررہ ضوابط کے مطابق 250 کلو میٹر کی رفتار سے گاڑی چلانے والا شہری 3 خلاف ورزیوں کا مرتکب ہوا ہے۔

ٹریفک قانون کے بموجب گاڑی چلاتے ہوئے ڈرائیور کو اس بات کی اجازت نہیں کہ وہ خود کو ڈرائیونگ کے سوا کسی اور کام میں مصروف کرے- ڈرائیونگ سے دھیان ہٹانا ٹریفک خلاف ورزی ہے اس پر 300 تا 500 ریال کا جرمانہ مقرر ہے۔

ڈرائیونگ کے دوران موبائل کا استعمال ممنوع ہے- مقامی شہری نے برق رفتار ڈرائیونگ کی موبائل سے ویڈیو بناکر دوسری خلاف ورزی کی اس پر 500 سے 900 ریال تک کا جرمانہ ہے-

ٹریفک قانون کے تحت شاہراہ پر مقررہ رفتار سے فی گھنٹہ 50 کلو میٹر سے زیادہ رفتار سے گاڑی چلانا قابل سزا عمل ہے اس پر 1500 سے 2 ہزار ریال تک کا جرمانہ ہے- مقامی شہری تینوں خلاف ورزیوں کا مرتکب ہوا ہے جس پر اسے تینوں سزائیں مل سکتی ہیں۔

یاد رہے کہ خلاف ورزیوں پر اظہار فخر کے لیے سوشل میڈیا کا استعمال ایک اور جرم ہے اس پر بھی اسے اضافی سزا دی جاسکتی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں