سعودی فرمانروا شاہ سلمان اسپتال میں داخل، پوری دُنیا میں تشویش کی لہر، حیران کُن صورتحال پیدا ہوگئی

سعودی فرمانروا شاہ سلمان کے اسپتال داخل ہوتے ہی تیل کی عالمی منڈیوں میں تشویش کی لہر پیدا ہوگئی۔

 سعودی فرمانروا تیل کی عالمی منڈیوں میں اس لیے اہمیت کے حامل سمجھے جاتے ہیں کیونکہ وہ گزشتہ کوئی سالوں سے اس ملک کی حکمرانی کر رہے ہیں جو ملک سب سے زیادہ خام تیل کو درآمد کر رہا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سعودی فرمانروا شاہ سلمان کی علالت کی خبر اور کورونا وائرس کے وجہ سے عالمی منڈیوں میں تیل کی درآمد میں کمی ہوگئی ہے۔ جس کے بعد عالمی سطح پر تشویش پائی جا رہی ہے۔

خیال رہے کہ سعودی عرب کے شاہ سلمان بن عبدالعزیز کو اچانک تکلیف ہونے پر طبی معائنے کیلئے اسپتال میں داخل کرلیا گیا ہے۔

سعودی پریس ایجنسی کے مطابق 84 سال کے شاہ سلمان کو مثانے میں سوجن کے سبب اسپتال میں داخل کیا گیا ہے۔

سعودی عرب کے شاہی محل سے جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا ہےکہ سعودی فرمانروا شاہ سلمان کو طبی معائنے کے لیے کنگ فیصل اسپیشلسٹ اسپتال میں داخل کیا گیا ہے۔ جہاں ڈاکٹرز کی ٹیم فرمانروا کا معائنہ کر رہی ہے۔

واضح رہے کہ سعودی فرماں روا شاہ سلمان بن عبدالعزیز 31 دسمبر 1935 ءکو پیدا ہوئے، وہ 2015 میں سعودی عرب کے بادشاہ بنے تھے، اس سے قبل وہ48 سال تک ریاض کے ڈپٹی گورنر اور گورنر بھی رہے۔

شاہ سلمان سعودی عرب کے وزیردفاع بھی رہ چکے ہیں، سلمان بن عبدالعزیز کو 2012ء میں سعودی عرب کے بادشاہ کے طور پر نامزد کیا گیا تھا اور2015 میں ان کے بھائی عبداللہ کے انتقال کے بعد انہیں بادشاہت ملی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں