بھارت کی نیپال میں مداخلت، وزیر اعظم کو اقتدار سے ہٹانے کی سازشیں

نیپالی وزیر اعظم کے پی اولی نے انکشاف کیا ہے کہ بھارت انہیں اقتدار سے ہٹانے کا منصوبہ بنا رہا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق وزیر اعظم نے کھٹمنڈو میں اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ملک کا نیا نقشہ جاری کرنے پر انہیں ہٹانے کی سازش کی جارہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ مجھے ہٹانے کے منصوبے پر عمل پارلیمان کے ذریعے کروایا جائے گا۔

واضح رہے کہ نیپال کے نئے نقشے میں لپو لیکھ، کالا پانی اور لمپیا دھورا کے علاقوں کو نیپالی سرزمین کے حصے کے طور پر دکھایا گیا ہے۔

بھارت نے روایتی طور پر دعویٰ کیا تھا کہ یہ اس کے علاقے ہیں اور نیپال کے نئے دعوے نے دونوں ممالک کے تعلقات خراب کر دیے ہیں۔

مزید پڑھیں: سابق فرانسیسی وزیر اعظم نے ایسا کیا جرم کیا کہ 5 سال قید کی سزا سنا دی؟ اہم خبر جانئے

دوسری جانب سابق فرانسیسی وزیر اعظم کو اختیارات کا ناجائز استعمال کرنے پر 5 سال قید کی سزا سنا دی گئی۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق سابق فرانسیسی وزیر اعظم فرانسوائس فلون کو 4 لاکھ 23 ہزار ڈالر جرمانہ بھی ادا کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔ فرانسوائس فلون پر 10 سال کے لیے انتخابات لڑنے پر بھی پابندی لگا دی گئی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں