ملائیشیا میں 300 پاکستانیوں کو گرفتار کرلیا گیا، مگر کیوں؟ وجہ جان کر سب حیران

گرفتار پاکستانیوں میں زائدالمیعاد ویزہ،رہائشی اور ورک پرمٹ والے افراد شامل ہیں۔

ملائیشیا میں 300 پاکستانیوں کو گرفتار کرلیا گیا ہے جن میں کئی کورونا وائرس کا شکار ہیں۔

ملائیشیا میں کورونا آپریشن کے دوران 300 سے زائد پاکستانی شہری گرفتار کرلیے گئے۔گرفتار پاکستانیوں میں زائدالمیعاد ویزہ،رہائشی اور ورک پرمٹ والے افراد شامل ہیں، زیادہ تر گرفتاریاں کولالمپور میں مینارہ سٹی،جلان مسجد انڈیا اور سمپک رنگام میں ہوئی۔

ملائشیا میں پاکستانی ہائی کمیشن کی جانب سے معاملے پر مکمل خاموشی ہے۔تاہم وزارت خارجہ ذرائع کے مطابق گرفتاریوں کے معاملے کی پیروی کیلئے پاکستانی ہائی کمیشن کو ہدایات جاری کردی گئی ہیں۔سفارتی ذرائع کے مطابق آپریشن موومنٹ کنٹرول کے تحت ملائیشین پولیس، محکمہ امیگریشن اور فوج نے کوالالمپور میں مختلف مقامات پر آپریشن کیا۔

آپریشن کے بعد تمام عمارتوں اور رہائشی علاقوں کو فورسز نے گھیرے میں لے لیا جبکہ زیرحراست پاکستانی شہروں میں غیرقانونی تارکین وطن بھی شامل ہیں۔

گرفتار افراد میں سے چند کورونا وائرس کا شکار ہے جن یاد بھی طور پر کیمپ منتقل کر دیا گیا ہے۔خیال رہے کہ ملائشیا میں بدھ کوکورونا وائرس کے 45 نئے کیسز کی تصدیق ہوئی ہے، جس کے بعد کورونا وائرس سے متاثرہ افرادکی مجموعی تعداد 6428 ہو گئی ہیں۔ برطانوی خبر رساں ادارے کے مطابق ملائشیا کی وزارت صحت نے کورونا وائرس سے مزید ایک موت کی اطلاع دی ہے جس سے مجموعی اموات 107 ہوگئی ہیں۔

ملائیشیا میں کورونا وائرس سے صحت یاب ہونے والے افراد کی تعداد 4702 ہوگئی ہے۔ کورونا وائرس کی وجہ سے دنیا بھر میں اب تک 42 لاکھ56ہزار729 سے زیادہ افراد متاثر جبکہ دو لاکھ 86 ہزار سے زائد افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

جبکہ پاکستان میں 32 ہزار سے زائد افراد متاثر ہیں جبکہ 706 افراد ہلاک ہو چکے ہیں جبکہ امریکہ میں اموات کی تعدادا 80 ہزار سے تجاوز کر گئی ہے ‘یورپ اور ایشیا کے کئی ممالک بڑھتے کیسز کے باوجود لاک ڈاﺅن میں نرمی لا رہے ہیں واشنگٹن میں وائٹ ہاﺅس کے اہلکاروں کو کہا گیا ہے کہ وہ صدر کے دفتر میں ماسک پہنیں یا پھر وہاں سے دور رہیں جبکہ انڈیا میں ایک دن میں متاثرین کی ریکارڈ تعداد سامنے آئی ہے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں