کورونا وائرس کب ، کیسے پھیلا ؟ بارک اوبامہ ڈونلڈ ٹرمپ پر برس پڑے، حیرت انگیز انکشافات

سابق امریکی صدر موجودہ امریکی صدر پر برس پڑے۔ باراک اوباما کہتے ہیں کہ کورونا وائرس سے نمٹنے کیلئے ٹرمپ کی حکمت عملی تباہ کن ثابت ہوئی ہے۔

اُدھر ٹرمپ انتظامیہ کے اہم عہدیداروں نے کورونا میں مبتلا افراد کےساتھ ممکنہ رابطے پر خود کو قرنطینہ کرلیا ہے۔عالمی وبا کے دور میں ڈونلڈ ٹرمپ نے متعدد بار نظام صحت میں کمزوریوں کا ذمہ دار سابق امریکی صدر باراک اوباما اور ان کی ڈیموکریٹک پارٹی کو قرار دیا ہے، لیکن اوباما کی جانب سے اب تک کوئی باضابطہ ردعمل نہیں آیا تھا۔

نجی ٹی وی کے مطابق امریکی میڈیا میں اوباما کی ایک کال لیک ہوئی ہے، جس میں وہ عالمی وباء سے نمٹنے کیلئے ٹرمپ کی حکمت عملی پر تنقید کر رہے ہیں، اوباما کا کہنا تھا کہ ڈونلڈ ٹرمپ نے جس انداز میں عالمی وباء کو ہینڈل کیا، وہ افراتفری پر مبنی تباہی کا پیش خیمہ ہے۔ انہوں نے اس رد عمل کی وجہ خود پرستانہ ذہنیت کو قرار دیا، جس کی وجہ سے ٹرمپ اپنے علاوہ کسی کو کوئی اہمیت نہیں دیتے۔

اُدھر ٹرمپ انتظامیہ کے اہم عہدیداروں نے کورونا میں مبتلا افراد کے ساتھ ممکنہ رابطے پر خود کو قرنطینہ کرلیا ہے، سنٹر فار ڈیزیز کنٹرول اینڈ پریونشن کے سربراہ رابرٹ ریڈ فیلڈ اور ایف ڈی اے کمشنر اسٹیفن ہان آئندہ دو ہفتوں تک اپنے فرائض گھر سے ہی انجام دیں گے، جبکہ کورونا ٹاسک فورس کے اہم ترین رکن ڈاکٹر اینتھونی فاؤچی نے بھی خود کو الگ تھلگ کر رکھا ہے، مگر وہ قرنطینہ کے مروجہ طریقہ کار سے مختلف انداز میں ایسا کر رہے ہیں۔

امریکا میں کورونا وائرس کے سبب ہلاک افراد کی تعداد 80 ہزار سے تجاوز کر چکی ہے، جبکہ متاثرین کی مجموعی تعداد ساڑھے 13 لاکھ کے قریب ہے، جن میں سے کم و بیش 2 لاکھ 40 ہزارمریض صحتیاب ہو چکے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں