امریکا کے پاس ووہان تجربہ گاہ سے متعلق دعوؤں کا کوئی ثبوت نہیں، چین کا بیان سامنے آگیا

چین نے کہا ہے کہ امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو کا یہ دعویٰ بے بنیاد ہے کہ کورونا وائرس چین کے شہر ووہان میں قائم تجربہ گاہ سے پھیلا۔

مائیک پومپیو کے پاس ووہان لیبارٹری کے بارے میں اپنے دعوے کا کوئی ثبوت نہیں۔ ان کے پاس کوئی ثبوت نہیں۔ اس لیے وہ ثبوت پیش بھی نہیں کرسکتے۔ غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق چینی وزارت خارجہ کی ترجمان ھوا شونیینگ نے ایک بیان میں کہا کہ امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو بارہا یہ دعویٰ کرچکے ہیں کہ کرونا وائرس ووہان شہر میں قائم لیبارٹری سے پھیلا مگر وہ اپنے اس دعوے کا کوئی ٹھوس ثبوت پیش نہیں کرسکے۔

انہوں نے کہا کہ امریکی وزیر خارجہ ثبوت کیوں پیش نہیں کرسکے۔ اس لیے کہ ان کے پاس کوئی ثبوت نہیں ہے۔ چینی وزارت خارجہ کی ترجمان کا کہنا تھا کہ ہمیں کرونا کے پھیلائو کے مقام اور اس کے اسباب سیاسی رنگ دینے کے بجائے ماہرین اور سائنسدانوں پر چھوڑ دینا چاہیے۔ سیاست دان اپنی داخلی سیاسی ضروریات اور مفادات کی وجہ جھوٹ بولتے ہیں مگر سچ بات سائنسدان بتائیں گے کہ آیا یہ وائرس کیسے اور کہاں سے پھیلا۔

خیال رہے کہ گذشتہ اتوار کے روز ایک بیان میں کہا تھا کہ قرائن اور ان گنت دلائل اس بات کی طرف اشارہ کرتے ہیں کہ کرونا کی وبا کا مصدر چین کی ووہان شہر میں قائم تجربہ گاہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ پوری دنیا کویہ یقین کرلینا چاہیے کہ مہلک کرونا وبا پھیلانے میں ایران کی تجربہ گاہیں ملوث ہیں۔خیال رہے کہ گذشتہ برس دسمبر میں کرونا کا پہلا کیس چین میں سامنے آیا تھا۔ اس کے بعد اب تک اڑھائی لاکھ افراد اس کے نتیجے میں ہلاک اور 36 لاکھ سیزاید متاثر ہوچکے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں