کورونا وائرس: دنیا میں کئی مقامات پر قحط، اقوامِ متحدہ نے خطرے کی گھنٹی بجادی

اقوام متحدہ نے خبردار کیا ہے کہ کورونا کی وجہ سے دنیا میں کئی مقامات پر قحط آسکتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق عالمی ادارے نے تمام ممالک کے حکمرانوں کو خبردار کیا ہے کہ کروناوائرس سے مستقبل میں مزید سنگین نتائج کے امکانات ہیں، کئی مقامات پر قحط پڑسکتا ہے۔

اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ مؤثر اقدامات نہ ہوئے تو مختلف علاقوں میں بھوک اور افلاس پھیل سکتی ہے، جانیں بچانے کے لیے یو این رکن ممالک مزید 470کروڑ ڈالر کی امداد دیں۔

’کرونا سے 3ماہ میں عالمی سطح پر اشیاخوردونوش کی قیمتوں میں کمی ہوئی، بہت سے ممالک میں لاک ڈاؤن کے باعث اشیا کی ترسیل رک چکی ہے، عالمی وبا کو روکنے کے لیے امداد کی ضرورت ہے‘

کرونا وائرس دنیا بھر میں کس طرح پھیلا؟ اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل کا بڑا اعتراف

خیال رہے کہ اقوام متحدہ کی ٹاسک فورس کی جانب سے جاری کردہ حالیہ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اقدامات نہ کیے تو کروناوائرس کئی ممالک کی معیشیت کو لے ڈوبیں گی۔ ٹاسک فورس میں شامل 60 ایجنسیوں نے معاشی تباہ کاریوں باعث سنگین نتائج سے متعلق متنبہ کیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق مشترکہ اور تیزحکمت عملی نہ اپنائی گئی تو غریب ممالک عدم استحکام کا شکار ہوں گے، کرونا کرائسز سے اکثر ممالک قرضوں کے بحران میں پھنس جائیں گے۔ اقوام متحدہ ٹاسک فورس نے غریب ممالک کے قرضے معطلی کی سفارش کردی اور کہا قرض دینے والے ادارے معطلی کا آغاز کریں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں