مودی سرکار کے معشیت میں میدان مارنے کے دعوے جھوٹ کا پلندہ، دبئی کے بنکوں کے نادہندگان نکلے

مودی سرکار کے معیشت میں میدان مارنے کے دعوے بڑے بڑے مگر حقیقت کچھ اور،بھارت کی بزنس شخصیات نے دبئی کو بھی چونا لگا دیا۔

بڑے بڑے کارپوریٹ دبئی کے بنکوں کے نادہندگان نکلے ملین بلین کے قرضے لے کر رفو چکر ہوگئے۔ بینکوں نے بھی قانونی راست اختیار کرنے کی ٹھان لی اب دیکھتے ہیں مودی سرکار اپنی معثیت کو کیسے بچاتے ہے۔

متحدہ عرب امارات کے بینکوں نے بھارتی نادہندگان کو قانونی شکنجے میں لانے کے لئے کمر کس لی ھے،اماراتی بینکوں نے قرض دہندگان سمیت قرض کے نادہندگان کے خلاف قانونی کارروائی شروع کرنے کے لئے تمام تر تیاریاں مکمل کرلی۔ جن کا مجموعی طور پر ڈیفالٹ قرض چار لاکھ اسی ہزار سے زائد ہے۔

ان بنکوں کی پہلی ترجیح ٹکٹ کارپوریٹ اور بزنس لون نادہندگان کا تعاقب کرنا ہوگی تاہم دو لاکھ پچاس ہزار درہم سے زائد کے نادہندگان بھی نشانے پر ہوں گے۔

قانونی کارروائی اور پکڑے جانے کے خوف سے اکثر بھارتی قرض دہندگان ملک سے فرار ہوچکے ہیں۔

بھارتی بھگوڑوں پر پانچ سو ارب روپے سے زائد کے قرضے واجب الادا ہیں متحدہ عرب امارات کے بنکوں نے مفرور بھارتیوں کے خلاف بین الاقوامی سطح پر بھی قانونی کارروائی کرنے کے لئے تمام اقدامات مکمل کرلئے ہیں۔

جبکہ متعد بینکوں نے بھارتی عدالتوں سے بھی قرض دہندگان کے خلاف خدمات حاصل کرلی ہیں جو کہ قرضوں کی ادائیگی کے لئے حکمت عملی وضح کرنے میں مدد کر سکتے ہیں۔

اب دیکھنا ہے کہ پرائے مال پر دادا کی جا فاتحہ دینے والی مودی سرکار اور اسکے مفاد پرست اور خود غرض کاروباری مافیا اپنی ڈوبتی ہوئی معثیت کو کیسے بچاتے ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں