حسن نصراللہ کا ایک بار پھر امریکا کو بڑی دھمکی، ڈونلڈ ٹرمپ حواس باختہ؟ امریکا میں ہلچل

حزب اللہ کے سربراہ حسن نصراللہ نے امریکا کو خطے سے نکالنے تک جدوجہد جاری رکھنے کا اعلان کر دیا۔

لبنانی ٹی وی پر براہ راست نشر ہونے والی تقریر میں حسن نصراللہ نے کہا کہ ایران کی جانب سے جوابی بلیسٹک میزائل حملے سے سب پر واضح ہوگیا ہے کہ وسطی ایشیا میں امریکا کے تمام اڈے ہمارے میزائلوں کی رینج میں ہیں، اب وقت آگیا ہے کہ جنرل قاسم سلیمانی کے قتل کا بدلہ لینے کے لیے ایران کے اتحادی مل کر جدوجہد کریں اور امریکا کو خطے سے نکالنے تک مجتمع ہو کر کام کریں۔

انہوں نے کہا کہ ایرانی جوابی حملہ اسرائیل کے لیے بھی ایک کھلم کھلا پیغام ہے تاکہ صہیونی بستی کو اپنی غلط جگہ کا پتہ چل جائے۔

حسن نصراللہ نے کہا کہ عین الاسد فوجی اڈے پر حملہ امریکیوں کے منہ پر طمانچہ ہے اور یہ جنرل سلیمانی کو قتل کرنے کا انتقام نہیں ہے بلکہ یہ تو خطے سے امریکا کو نکالنے کا پہلا قدم ہے اور امریکی فورسز کے مکمل انخلا تک یہ جاری رہے گا، ان امریکیوں کہ چہرے دیکھو! کیا یہ کہیں سے بھی فاتح نظر آتے ہیں؟

حزب اللہ کے سربراہ نے خطے میں ایرانی اتحادیوں پر زور دیا کہ اب وقت آگیا ہے کہ مشترکہ جدوجہد کا آغاز کر کے امریکا کو وسطی ایشیا سے نکالا جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں