امریکا یا سعودی عرب نے حملہ کیاتو..ایران نے واضح طور پر خبردار کردیا

سعودی عرب کی تیل تنصیبات پر حملوں کے بعد مشرق وسطیٰ میں ہر گزرتے دن کے ساتھ کشیدگی میں اضافہ ہورہا ہے اور بعض ماہرین تو جنگ کا بھی عندیہ دے رہے ہیں۔

اسی تناظر میں بھارتی وزیر خارجہ جواد ظریف نے بتایا ہے کہ اگر امریکا یا سعودی عرب نے حملہ کیا تو ایران کا ردعمل کیا ہوگا۔

امریکی ٹی وی سی این این کو انٹرویو میں جواد ظریف نے کہا کہ ‘ہم جنگ نہیں چاہتے نہ ہی کسی کے ساتھ عسکری محاذ آرائی چاہتے ہیں’۔

جب ان سے پوچھا گیا کہ اگر امریکا یا سعودی عرب نے ایران پر حملہ کیا تو آپ کا ردعمل کیا ہوگا تو انہوں نے جواب دیا کہ ‘پھر مکمل تباہ کن جنگ ہوگی’۔

جواد ظریف نے کہا کہ ایران اپنے دفاع کیلئے پلک جھپکنے سے بھی پہلے کارروائی کریں گے لیکن ہم جنگ نہیں چاہتے۔

ایرانی وزیر خارجہ نے کہا کہ ‘وہ ایسا ماحول بنارہے ہیں، اب وہ اس کی (سعودیہ پر حملوں کی) ذمہ داری ایران پر ڈالنا چاہتے ہیں تاکہ اپنے مقاصد حاصل کرسکیں، یہی وجہ ہے کہ میں اسے جنگی جنون کہتا ہوں کیوں کہ یہ جھوٹ اور دھوکہ دہی پر مبنی ہے’۔

ایران نے واضح طور پر خبردار کردیا ہے کہ اگر سعودی تیل تنصیبات کو جواز بناکر اس پر حملہ کیا گیا تو وہ جوابی کارروائی میں زیادہ دیر نہیں لگائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں