بین الاقوامی

جاپان میں بچوں کی شرح پیدائش میں ریکارڈ کمی

جاپان میں بچوں کی شرح پیدائش 2023 میں مسلسل آٹھویں سال گر کر ریکارڈ کم ترین سطح پر آگئی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق حکومت کی جانب سے جاری کردہ اعدادو شمار سے پتہ چلتا ہے کہ بچوں کی شرح پیدائش میں نمایاں کمی واقع ہوئی ہے، بچوں کی پیدائش کی شرح گزشتہ سال کے مقابلے میں مزید 5.1فیصد کم ہوکر 758,631 ہو گئی، جب کہ شادیوں کی تعداد 5.9 فیصد کم ہو کر 489,281 ہو گئی۔

جاپان کے اعلیٰ حکومتی ترجمان کا کہنا ہے کہ حکومت بچوں کی شرح پیدائش میں ہونے والی کمی سے نمٹنے کے لئے اقدامات اُٹھارہی ہے۔

حکومتی ترجمان کا کہنا تھا کہ گرتی ہوئی شرح پیدائش ایک نازک صورتحال ہے۔ اگلے چھ سال 2030 تک، جب نوجوانوں کی تعداد میں تیزی سے کمی رونما ہوگی، یہ اس رجحان سے نمٹنے کے لئے آخری موقع ہوگا۔

انہو ں نے کہا کہ جاپانی وزیر اعظم Fumio Kishida نے اس صورتحال کو ملک کو درپیش سب سے بڑا بحران قرار دیا ہے۔

نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف پاپولیشن اینڈ سوشل سیکیورٹی ریسرچ کے اندازوں کے مطابق، جاپان کی آبادی 2070 تک تقریباً 30 فیصد کم ہو کر 87 ملین ہو جائے گی۔

Related Articles

Back to top button